کتاب سموئیل

کتاب سموئیل-1 اور کتاب سموئیل۔2 دراصل ایک ہی کتاب کے دو حصے ہیں۔

کتاب سموئیل۔1

اس کتاب کے مصنف کے بارے میں یقینی معلومات موجود نہیں ہیں حالانکہ یہ سموئیل نبی کے نام سے منسوب ہے۔ اس کتاب میں درج واقعات سے اتنا ضرور معلوم ہوتا ہے کہ مصنف ان واقعات کے رُونما ہونے کے بعد کے زمانہ سے تعلق رکھتا ہے۔ یہودی علما اسے سموئیل نبی کی تصنیف قرار دیتے ہیں۔ بائبل میں سموئیل نبی کا ذکر کاہن، نبی اور قاضی تینوں حیثیت سے موجود ہے۔ یہود کے عالم سموئیل نبی کی بہت قدر کرتے ہیں، اس کی وجہ یہ بھی ہے کہ آپ نے داؤد کی تربیت میں اہم کردار ادا کیا۔ سموئیل نبی کی تربیت کی وجہ سے ہی داؤد کو عظیم بادشاہ بننے میں بہت مدد ملی۔داؤد کے بادشاہ بننے کی کہانی ایک گڈریے کے بادشاہ بننے کی کہانی ہے۔

یہ کتاب سلیمان کی وفات کے بعد یعنی تقریباً 930 قبل مسیح سے 722 قبل مسیح کے دوران لکھی گئی۔ یہ وہ زماہ تھا جب یہودیوں کی اُس حکومت کو زوال آ چکا تھا جسے شمالی علاقوں کی حکومت کا نام دیا گیا ہے۔

سموئیل-1 میں بنی اسرائیل کے اُن تاریخی واقعات کا ذکر ہے جو قاضیوں کے دور کے خاتمہ سے لے کر طالوت بادشاہ کی وفات (1105 تا 1010 قبل مسیح) تک جاری رہتے ہیں۔ یہ واقعات عیلی کاہن، سموئیل نبی، طالوت بادشاہ، داؤد بادشاہ اور یونتن سے متعلق ہیں۔عیلی کاہن کی وفات کے بعد سموئیل جواُن کے پاس ایک چھوٹے سے لڑکے کی حیثیت سے لائے گئے تھے، تعلیم و تربیت پا کر بڑے ہوتے ہیں اور بعد میں عیلی کاہن کے جانشین مقرر کیے جاتے ہیں۔ یوں آپ اسرائیل کے قاضی، نبی اور کاہن بن جاتے ہیں۔ سموئیل -1 میں بنی اسرائیل کی تاریخ کے ایک اہم موڑ کی نشان دہی کی گئی ہے۔ جب قاضیوں کی بجائے بنی اسرائیل پر بادشاہ حکومت کرنے لگے۔ طالوت جو اُن کا پہلا بادشاہ تھا، اپنی بے راہ روی کے باعث معزول کیا گیا اور اُس کے بعد حکومت کی باگ ڈور دوسرے بادشاہوں کے ہاتھ میں آ گئی۔ اس کتاب کا خاتمہ ساؤل بادشاہ کی عبرت آموز وفات پر ہوتا ہے۔

کتاب سموئیل-1 کو تین حصوں میں تقسیم کیا جا سکتا ہے:۔

  1. عیلی اور سموئیل کا تعلق (باب 1 تا باب 7 آیت 17 تک)
  2. سموئیل اور طالوت بادشاہ کے تعلقات ( باب 8 تا باب 15 آیت 35 تک)
  3. طالوت بادشاہ اور داؤد بادشاہ کے تعلقات ( باب 16 تا باب 31 آیت 13 تک)

کتاب سموئیل۔2

اس کتاب میں داؤد کے ایک مثالی بادشاہ کی حیثیت سے حکومت کرنے کی تاریخ بیان کی گئی ہے۔ ساؤل بادشاہ کی وفات کے بعد داؤد کا عہد سلطنت شروع ہوتا ہے۔ آپ بعد میں یہوداہ اور اسرائیل دونوں حکومتوں کوا پنے تسلط میں لے آتے ہیں اور یوں سارے بنی اسرائیل آپ کو بادشاہ تسلیم کر لیتے ہیں۔ آپ کے عہد میں یروشلم فتح کیا جاتا ہے جو آپ کا پایہ تخت قرار دیا جاتا ہے۔ آپ عہد کے صندوق کو یروشلم لے آتے ہیں اور کوشش کرتے ہیں کہ ہیکل کی تعمیر ہو لیکن آپ کو خداتعالیٰ کی طرف سے یہ کام کرنے سے روکا جاتا ہے۔ آپ کی فتوحات کا ذکر بھی اس کتاب میں آیا ہے۔

اسی کتاب میں آپ کے اُس گناہ کا ذکر کیا گیا ہے جس کا تعلق اوریاہ کی بیوی بت سبع سے ہے۔ ناتن نبی آپ کو آپ کے اس گناہ کی یاد دلاتے ہیں اور مجرم گردانتے ہیں۔ قرآن کریم میں ناتن نبی کی جگہ دو اشخاص جو اصل میں فرشتے تھے کا ذکر آیا ہے کہ وہ آپ کو گناہ یاد کراتے ہیں۔ آپ کو اس گناہ کی وجہ سے کئی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے یہاں تک کہ آپ کا بیٹا ابی سلوم آپ کے خلاف بغاوت پر آمادہ ہو جاتا ہے اور تحکت حکومت پر قبضہ کرنے کی کوشش کرتا ہے۔ داؤد سے اور بھی کئی خطائیں سر زد ہوتی ہیں لیکن آپ کے توبہ کرنے کی وجہ سے خدا تعالیٰ آپ کو معاف کر دیتا ہے۔

داؤد کے مزامیر میں آپ کے بعض ایسے ہی نا مساعد تجربات کا عکس نظر آتا ہے۔ آپ کے مزامیر یہودی اور مسیحی عبادتوں کے وقت پڑھے اور گائے جاتے ہیں۔

اس کتاب کو داؤد کی سوانح حیات کہنا بھی درست ہو گا۔ سموئیل نے ہی آپ کی تربیت کی تھی اور آپ کو اس قابل بنا دیا تھا کہ آپ بطور بادشاہ بنی اسرائیل کی نہت ہی اچھی طرح قیادت کر سکیں۔

اس کتاب کو درج ذیل حصوں میں تقسیم کیا جا سکتا ہے۔

  1. داؤد بادشاہ کی سلطنت کا آغاذ (باب 1 تا باب 4 آیت 12)
  2. آپ یہوداہ اور اسرائیل دونوں حکومتوں کے سربراہ مقرر کیے جاتے ہیں (باب 5 تا باب 10 آیت 19)
  3. آپ کا گناہ (باب 11 تا باب 12 آیت 31)
  4. آپ کے مصائب (باب 13 تا باب 18 آیت 33)
  5. آپ کا دوبارہ حکومت کی باگ ڈور سنبھالنا ( باب 19 تا باب 20 آیت 26)
  6. آپ کے آخری سال (باب 21 تا باب 24 آیت 25)
اخیطوب

اخیطوب - مطلب نیکی کرنے والا بھائی = اچھا، بائبل میں یہ نام بہت کم آیا ہے جس میں :

(1.)اخیطوب، فینحاس کا بیٹا، عیلی کا پوتا، ایشابد کا بیٹا۔ عیلی کی وفات کے بعد اسرئیل کا کاہن اخیطوب بنا اور اس کے بعد اخیاہ بنا۔ اور یہ بائبل میں یہ لکھا ہے کہ اخیاہ اخیطوب کا بیٹا تھا۔ (سموئیل 14:3؛ 22:9، 11، 12، 20 اور 1 تواریخ 9:11) اخیاہ ( یا ”احیاہ“) جس کو اخیطوب کا بیٹا کہا گیا ہے اس کا ذکر 1 سموئیل 3-14:2، 18-19 میں ہے۔ یا پھر یہ ابی میلیک ہی ہو سکتا ہے۔ (1 سموئیل 9-22:20) یا پھر ابی میلیک اخیطوب کا دوسرا بیٹا ہو(اگر ایسا ہوا تو ابی میلیک اخیطوب کا بڑا بیٹا ہے)۔

(2.)صدوق کا باپ تھا(2 سموئیل۔ 17-8:15)۔ یہ اخیطوب امریاہ کا بیٹا تھا۔ اور امریاہ، مرایوت کا بیٹا تھا۔ اور مرایوت، زراخیاہ کا بیٹا تھا اور زراخیاہ، عزی کا بیٹا تھا۔ اور عزی، بقی کا بیٹا تھا۔ اور بقی، ابیسوع کا بیٹا تھا اور ابِیسُوع، فینحاس کا بیٹا تھا۔ اور فینحاس، الیعزر کا بیٹا تھا۔ اور الیعزر، ہارون کا بیٹا تھا (1 تواریخ 8-6:3)۔ اور یہ بھی ہو سکتا ہے اس اخیطوب کو کاہن طالوت یا ساؤل نے بنایا ہو اور یہ ابی میلیک کے خاندان کے قتل کے بعد ہوا تھا۔ پر اس بات کا کہیں ذکر نہیں ہے جو اس بات کو ثابت کرسکے۔ اور ساؤل نے اپنے دور میں اس واقعہ کے بعد کوئی سرکاری کاہن نہیں بنایا تھا (دیکھیں یوسیفس کی

یہودیوں کی عہد قدیم کتاب VI، باب XII، پیراگراف 7)۔

(3.)ایک اور اسی نام کا کاہن۔ اس کاہن کا ذکر

1 تواریخ 12-6:11 میں ہے۔ اور یہاں معاملات اور الجھ گئے ہیں کیوں اس اخیطوب کے بیٹے (یا شاید پوتے) کا نام بھی صدوق ہے۔

(4.)اس اخیطوب کا ذکر نحمیاہ 11:11 میں ہے۔ اور یہ شخص شاید مذکورہ بالا تین اخیطوب میں سے ایک ہے۔ اور شاید نہیں بھی۔

اشبوست

اشبوست(אִֽישְׁבֹּ֫שֶׁת; معیاری: Ishbóshet; طبری: ʼΚbṓšeṯ) اور اسے اشبال (אֶשְׁבַּ֫עַל; معیاری: Eshbáʻal; ظبری: ʼEšbáʻal) بھی کہتے ہیں۔ اس نام کا مطلب ”حیاء دار آدمی“ بنتا ہے۔

عبرانی بائبل کے مطابق، اشبال یا عشبال،ساؤل کے چار بیٹوں میں سے ایک بیٹا تھا۔ اشبوت کو ساؤل کی موت کے بعد اسرائیل کا دوسرا بادشاہ چنا گیا تھا۔ اس کو بادشاہ اس کے تین بڑے بھائیوں اور باپ کے جلبوعہ

کی جنگ میں وفات کے بعد بنایا گیا تھا۔

القانہ

کتاب سموئیل کے مطابق، القانہ (عبرانی: אֱלְקָנָה‎ ’Elqānāh "ال نے خریدا ہے")، حنہ کے شوہر اور سموئیل کے والد تھے۔ القانہ کی متعدد شریک حیات تھیں؛ جس میں وہ اپنی دوسری بیوی فننہ کو کم ترجیح دیتا تھا۔ حالانکہ کہ فننہ نے القانہ کو زیادہ اولادیں پیدا کر کے دی تھیں۔

اس کتاب میں القانہ کی اولاد میں سے صرف سموئیل مذکور ہیں۔ اور دیگر اولادوں کے نام کا ذکر نہیں کیا گیا۔ القانہ نے بائبل کی داستانوں میں محض ایک چھوٹا سا کردار ادا کیا ہے، جس میں انہوں نے عیلی اور حنہ کے ساتھ حمایتی کردار ادا کیا ہے۔

بت سبع

بت سبع یا بتشابع (انگریزی: Bathsheba، عبرانی: בַּת שֶׁ֫בַע‎، بت-شبا‘، "قسم یا عہد کی بیٹی"؛ عربی: بثشبع، "ابنة القسم") عبرانی کتاب مقدس کے مطابق مملکت اسرائیل کے بادشاہ داؤد کی زوجہ اور شاہ سلیمان کی والدہ تھی۔ کتاب سموئیل۔2 میں داؤد اور بت سبع کے بارے میں ایک نامناسب کہانی میں موجود ہے جسے کتاب تواریخ۔1 میں حذف کر دیا گیا ہے۔ اسلامی نقطۂ نظر بھی اس کہانی کی توثیق نہیں کرتا۔

بائبل کے مطابق یہ الیعام اور عمی ایل کی بیٹی تھی دونوں ناموں کو مطلب عبرانی میں یکساں ہے یہ حتی اوریاہ کی بیوی تھی جو شاہ داؤد کی فوج میں ایک سپاہی تھا داؤد نے اوریاہ کی غیر حاضری میں جب وہ جب وہ جنگی محاذ پر لڑ رہا تھا بت سبع سے زنا کیا اور جب وہ حاملہ ہو گئی تو کوشش کی کہ اُس کا خاوند اُس کا خاوند اس کے پاس آئے جب وہ اس میں ناکام ہوا تو اوریاہ کو گھسمان میں بھجوا کر قتل کروا دیا اس کے بعد داؤد نے بت سبع سے شادی کر لی اور وہ محل میں رہنے لگی۔ اُس کے چار بیٹے سِمعا، سُوباب، ناتن اور سلیمان ہوئے اس نے ناتن نبی کی مدد سے اودنیاہ کے سلطنت چھیننے کی سازش کو ناکام بنا دیا اور اپنے بیٹے سلیمان کو تخت کا جانشین بنانے میں کامیاب ہوئی۔وہ بڑی حاضر دماغ اور باتدبیر خاتون تھی۔ اس نے شاہ داؤد پر اُس کے آخری ایام تک اثر و رسوخ رکھا۔ روایت ہے کہ امثال باب 31 کو بت سبع نے اپنے بیٹے سلیمان کی فرعون کی بیٹی سے شادی کے موقع پر نصیحت کے طور پر لکھا۔ ١ تواریخ میں اسے بت سُوع بھی کہا گیا ہے۔

اس کے کُل چار بیٹے تھے سلیمان کے علاوہ تین بیٹوں کا نام سِمعا، سُوباب اور ناتن تھا۔علمائے اسلام شاہ داؤد کا بت سبع سے زنا کرنے کو مسترد کرتے ہوئے اس کہانی کو من گھڑت تصور کرتے ہیں۔

بیت لحم

بیت لحم (Bethlehem) لفظی معنی گوشت کا گھر۔ فلسطین کی ایک بستی کا نام جو حضرت مسیح کی جائے پیدائش ہے۔ یہ گاؤں فصیل کے اندر سفید پتھروں سے تعمیر کیا گیا ہے اور یروشلم کے قدیم شہر سے 5 میل(8کلومیٹر) جنوب کو واقع ہے۔ اس جگہ حضرت یسوع مسیح کی روایتی جائے پیدائش کے اوپر صلیب کی شکل کا ایک گرجا بنا ہوا ہے۔ جس کے نیچے ایک تہ خانہ ہے۔ یہی گاؤں، ایک روایت کے بموجب، داؤد کی جائے پیدائش اور مسکن تھا۔ بستی کے رہنے والے عام طور پر مسیحی ہیں۔ جن کی گزراوقات زائرین کی آمد پر ہے۔ یہ بستی سلطنت اردن میں شامل تھا۔ جون 1967ء کی جنگ میں اس پر اسرائیل نے قبضہ کر لیا۔

تمر (داؤد کی بیٹی)

تمر (عبرانی: תָּמָר، جدید tamar ، طبری تامار) کا ذکر کتاب کتاب سموئیل۔دوم اور عبرانی بائبل میں درج ہے۔ تمر داؤد کی بیٹی اور ابی سلوم کی بہن تھی۔ اس کی ماں معکہ بنت تلمی (شاہ جسور) تھی۔ اس کا جنم یروشلم میں ہوا تھا۔ تمر کے ساتھ اس کے سوتیلے بھائی امنون نے زنائے محرم کیا تھا۔

جاد (نبی)

جاد (عبرانی: גד) ایک پیغمبر ہیں جن کا تذکرہ تنک اور یوسیفس کی تحریروں میں آیا ہے۔ وہ بنی اسرائیل کے مشہور بادشاہ اور پیغمبر داؤد کے ذاتی ابنیاء میں سے ایک تھے۔ تلمود کی روایات کے مطابق ان کے کچھ ملفوظات کتاب سموئیل میں مذکور ہیں۔ سب سے پہلے ان کا تذکرہ سموئیل اول 22: 5 میں آیا ہے جس میں وہ داود کو موآب کی پناہگاہ سے یہودیہ کے جنگلوں کی طرف لوٹنے کا مشورہ دیتے ہیں۔

جاد کا دوسرا تذکرہ سموئیل دوم 24: 11-13 میں آیا ہے جب داود اسرائیل اور یہودیہ کے لوگوں کی مردم شماری کے تعلق اپنی خطا کا اقرار کرتے ہیں،پھر خدا جاد کو داود کی طرف اپنا پیغام لیکر بھیجتے ہیں کہ تین سزاؤں میں کسی ایک کو اپنے لیے منتخب کر لیں۔

جاد کا آخری تذکرہ کتاب سموئیل کے 24: 18 میں ملتا ہے جب داود سزا کے طور پر وبا کا انتخاب کرتے ہیں۔ چنانچہ خد وبا نازل کر دیتا ہے جس میں 70 ہزار جانیں جاتی ہیں۔ اسی دوران جاد داود کے پاس آتے ہیں اور ان کو کہتے ہیں کہ خدا کے لیے ایک قربان گاہ بنائیں۔ قربان گاہ کی جگہ یبوسی اروناہ کی کھلیان خدا خود منتخب کرتا ہے۔ اسی جگہ سے خدا کی عبادت کی جاتی ہے اور پھر سزا وبا کو روک دیتا ہے۔ بعد میں سلیمان اسی جگہ کو اپنے ہیکل سلیمانی کے لیے منتخب کرتے ہیں۔

تواریخ 21: 18 میں مذکور ہے کہ جاد نے خداوند کے فرشتہ کے ساتھ مقابلہ آرائی کی ہے۔

حلحول میں جاد کا مقبرہ موجود ہے۔

جالوت

جالوت (/ɡəˈlaɪəθ/; عبرانی: גָּלְיָת، جدید Golyat ، طبری Golyāṯ; عربی: جالو، جليات Ǧulyāt (مسیحی اصطلاح)، Ǧālūt (قرآنی اصطلاح) میں جات

(فلستیوں کے پانچ ریاست شہروں میں سے ایک) ایک بائبل کا کردار ہے جس کو بیان کیا گیا ہے کے وہ دیو فلستی جنگجو تھا جس کو داؤد نے شکست دی۔

حنہ

حنہ (عبرانی חַנָּה Ḥannāh; انگریزی تلفظ /ˈhænə/) القانہ کی بیوی تھیں جن کا ذکر کتاب سموئیل میں موجود ہے۔ عبرانی بائبل کے مطابق حنہ سموئیل کی والدہ تھیں۔

داؤد (بادشاہ)

داؤد (/ˈdeɪvɪd/; عبرانی: דָּוִד، جدید David ، طبری Dāwîḏ; Dawid; قدیم یونانی: Δαυίδ Davíd; لاطینی: Davidus, David) عبرانی بائبل کے مطابق، داؤد مملکت اسرائیل کا دوسرا بادشاہ تھا۔ مگر دوسرا بادشاہ اشبوست تھا۔ اس میں اختلاف پایا جاتاہے۔ داؤد مملکت اسرائیل کے دوسرے یا تیسرے بادشاہ تھے۔ ان کی حکومت کا دور ت 1010–970 ق-م تھا۔

رصفہ

رصفہ (انگریزی: Rizpah ؛ جدید: Ritspah ؛ عبرانی: רִצְפָּה ؛ یعنی ”کوئلہ، گرم پتھر“) ایاہ کی بیٹی تھی اور ساؤل کی داشتہ (انگریزی: Concubine) تھی۔

ساؤل

ساؤل (/sɔːl/; عبرانی: שָׁאוּל، جدید Šāʼûl ، طبری "دعا،کے لیے پوچھا"; لاطینی: Saul; عربی: طالوت، Ṭālūt یا عربی: شاؤل، Sha'ūl)، عبرانی بائبل کے مطابق، ساؤل مملکت اسرائیل اور یہوداہ کا پہلا بادشاہ تھا۔ اس کا دور، راویتی طور پر گیارہویں صدی ق م میں تھا۔ جس نے ایک قبائلی معاشرے کو ریاست بنا دیا۔

سموئیل

ان کو شموئیل کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ عہد 1020 سے 1100 قبل مسیح ہے۔ ملک شام قدیم میں ایک کوہستانی علاقہ افرائیم کے نام سے تھا۔ اس کے شہر رامہ میں آپ رہتے تھے۔

سمہ بن اجی

سمہ (انگریزی: Shammah؛ عبرانی: שַׁמָּה‎؛ مطلب: ”خدا ہمارے ساتھ ہے۔“) ایک شخصیت کا نام ہے جس کا ذکر عبرانی بائبل میں کیا گیا ہے۔ یہ اجی ہراری کا بیٹا تھا اور جو داؤد کے سورماؤں میں سے ایک تھا۔ جس کا ذکر کتاب سموئیل دوم میں آیا ہے:

دوسرا ذکر کتاب تواریخ میں سمعہ کی بجائے سموت کے نام سے آیا ہے:

دوسرا ذکر بھی کتاب تواریخ اول میں سمعہ کی بجائے ”سمہوت“ کے نام سے آیا ہے جو سال کے چوتھے مہِینے میں مملکت اسرائیل کے بادشاہ داؤد کی فوج میں کمانڈر کے طور پر خدمات سر انجام دیتا تھا:

سمہ یا سموت یا سمہوت کی سب سے بڑی کامیابی یہ تھی کہ جب فلستیوں کی فوج سے بنی اسرائیلی فوج شکست کھا رہی تھی تو تب تمام بنی اسرائیل فرار ہو گئے تھے۔ اس وقت سمعہ بن اجی نے دال کے پہاڑ کے مقام پر مقابلہ کرتے ہوئے 300-800 فلستی مرد فوجیوں کو اکیلے شکست دی تھی۔

اس کے علاوہ بائبل میں دوسرے سمہ بھی مذکور ہیں جن کا صرف نام لیا گیا ہے:

سمہ جس کا ذکر کتاب تواریخ میں آدم کے شجرہ نسب کیا گیا ہے۔اسی سمہ کا ذکر کتاب پیدائش میں کیا گیا ہے جو رعوایل کا بیٹا تھا۔سمہ یسی کا تیسرا بیٹا اور داؤد (بادشاہ) کا بھائی تھا۔

عیلی

عیلی (عبرانی: עלי، جدید ʻEli ، طبری ʻĒlî، مطلب "چڑھائی" یا "اوپر"; قدیم یونانی: Ἠλί Ēli; لاطینی: ہیلی) کتاب سموئیل۔1 کے مطابق سیلا(عبادت گاہ) کے کاہن اعظم تھے۔ اورعیلی کتاب قضاة کے مطابق بنی اسرائیل کے قاضی تھے۔تلمود اور سامری مذہب ان کو نبی مانتے ہیں۔

فننہ

فننہ (عبرانی: פְּנִנָּה‎؛ Pəninnāh؛ کبھی کبھار نقل حرفی فینینا) القانہ کی دو بیویوں میں سے ایک تھی، جس کا مختصر تذکرہ کتاب سموئیل۔1 میں 1:2 میں آیا ہے۔ ان کا نام (pənînîm، פְּנִינִים) سے اخذ کردہ ہے جس

کا مطلب موتی، جواہر یا مرجان بنتا ہے

ناتن

ناتن (عبرانی: נָתַן‎ ؛ سریانی: ܢܬܢ) عبرانی تنک میں مذکور ایک عظیم شخصیت ہیں۔ ان کا زمانہ تقریباً 1000 سال قبل مسیح کا ہے۔

ان کے اقوال و افعال کا تذکرہ کتاب سموئیل، کتاب سلاطین اور کتاب تواریخ میں موجود ہے۔ (خصوصاً 2 سموئیل 7: 2-17، 2 سموئیل 12: 1-25)۔

کتاب سموئیل کی روایات کے مطابق ناتن داؤد کے درباری پیغمبروں میں سے ایک تھے۔ انہوں نے داؤد بادشاہ کو خدا کے اس عہد کے بارے میں باخبر کیا تھا جو خدا ان کے ساتھ کرنے والے تھے۔ (2 سموئیل 7: 4-17 اس کو ناتن کا معجزہ بھی کہا جاتا ہے۔)خدا نے داؤد کے لیے ایک گھر بنایا (آل داؤد)، یہ داؤد کے لیے خدا کا انعام تھا، چنانچہ داؤد بھی خداکے لیے ایک گھر تابوت سکینہ تعمیر کرنا چاہتے تھے، اس پر ناتن نے ان کو متنبہ کیا کہ ایسا نہ کریں۔ اس کے ایک اور واقعہ ہوا جہاں ناتن داؤد کے لیے فرشتہ بن کر ثابت ہوئے۔ واقعہ یوں ہے کہ اوریا بن حتی کو داؤد نے جنگ میں قتل کر دیا اور اس کی بیوی بت سبع کے ساتھ جماع کرنا چاہا، تب ناتن نے ان کو بتایا کہ اگر وہ ایسا کرتے ہیں تو وہ زنا کے مرتکب ہوں گے۔ یہ واقعہ کتاب سموئیل میں مذکور ہے۔

کتاب تواریخ میں یہ روایت ہے کہ ناتن نے داؤد کے عہد حکومت اور سلیمان کے عہد حکومت کی تاریخ لکھی ہے۔ اور وہ ہیکل کی موسیقی سے بھی وابستہ تھے۔

کتاب سلاطین میں مذکور ہے کہ وہ ناتان ہی تھے جنہوں نے صحب فراش داؤد کو ادونیا کے بادشاہ بننےکے بارے میں بتایا، جس کے بعد ادونیا کی بجائے سلیمان کی بادشاہت کا اعلان کر دیا گیا۔ ناتن نے سلیمان بادشاہ کے سر پر مقدس تیل کا مسح کیا تھا اور ان کا نام نظم زدوک دی پریسٹ میں سلیمان کے مسح کرنے والے کو ور پر مذکور ہے۔

24 اکتوبر تقویم برائے مقدسین کو ناتن پیغمبر کے مقدس دن کے طور پر منایا جاتا ہے۔ مشرقی راسخ الاعتقاد کلیسیا اور وہ تمام لوگ جو بازنطینی ریت کی تابع مشرقی راسخ الاعتقاد کلیسیا کو مانتے ہیں، کرسمس کے بڑے میلے سے پہلے اتوار کو ناتن کو بزرگ تسلیم کرتے ہیں۔

کتاب روت

کتاب روت (عبرانی: ) عبرانی بائبل کی کتاب ہے۔روت ایک چھوٹی سی کتاب ہے جس میں ایک موآبی خاتون روت کا مثالی کردار پیش کیا گیا ہے۔ آپ موآب کے علاقے کی رہنے والی تھیں۔ یہ علاقہ بحیرہ مردار (Dead Sea) کے مشرق میں واقع تھا۔ آپ ایک یہودی گھرانے میں شادی کر لینے کے باعث قوم یہود میں شامل ہو گئی تھیں۔ جیسا کہ اُس زمانے کا رواج تھا انہوں نے اپنے پہلے خاوند کی وفات کے بعد اپنے ہی ایک رشتہ دار بوعز سے شادی کر لی۔ اس کے بعد اُن کا ایک بیٹا پیدا ہوا۔ یہ بیٹا حضرت داؤد علیہ السلام کا دادا بنا۔روت کو اہل یہود کی طرف سے بہت عزت دی جاتی ہے، اس کی وجہ یہ ہے کہ وہ باہر سے یہود میں شامل ہوئیں اور اُن سے داؤد علیہ السلام جو نبی بھی بنے اور عظیم بادشاہ بھی ہوئے کا خاندان شروع ہوا۔

روت کی کتاب یہودیوں کی مقدس کتاب شمار کی جاتی ہے۔ یہ کتاب عید پنتکست کے دنوں میں یہودی خاندانوں میں خاص طور پر پڑھی جاتی ہے۔ اس عید کے منائے جانے کی تفصیل کتاب احبار باب 15 کی آیات 15 تا 21 میں موجود ہیں۔

بعض علما اس کتاب کو سموئیل علیہ السلام نبی کی تصنیف مانتے ہیں حالانکہ اس کتاب میں اُس کے مصنف کے بارے میں کوئی اشارہ نہیں ملتا۔ بعض کا خیال ہے کہ یہ کتاب سموئیل علیہ السلام کے بہت بعد کے زمانہ کی تصنیف ہے۔ چونکہ اس کتاب میں دو جگہ یعنی بات 4 آیت 17 اور 22 میں داؤد علیہ السلام کا نام آیا ہے اس لیے خیال کیا جاتا ہے کہ یہ کتاب یہودی بادشاہوں کے زمانہ کے دوران یا بعد کی تصنیف ہے۔

اس کتاب میں روت، نعومی اور بوعز تین مرکزی کردار ہیں۔ تینوں نہایت خدا پرست اور خدا ترس انساان ہیں۔ اُن کے ایمان میں کسی حال کمی نہیں ہوتی۔ اس سے اہل یہود اور مسیحی یہ سبق لیتے ہیں اور باقی سب کو بھی لینا چاہیے کہ خدا تعالیٰ اپنے ایماندار بندوں کو ہمیشہ سنبھالتا ہے اور اُنہیں کبھی فراموش نہیں کرتا۔

اس کتاب کو چار حصوں میں تقسیم کیا جا سکتا ہے۔

نعومی اور الیملک کی موآب سے نقل مکانی، باب 1 آیت 1 تا 22۔

بوعز اور روت کی ملاقات، باب 2 آیت 1 تا 23۔

نعومی کا منصوبہ، باب 13 آیت 1 تا 18۔

بوعز، روت سے شادی کر لیتا ہے، باب 4 آیت 1 تا 18۔

کتاب یاشر

عہد نامہ قدیم میں ذکر کردہ ایک گم شدہ کتاب، کتاب سموئیل۔2 کے پہلے باب کی آیت 18یاشر کی کتاب یا راست باز کی کتاب کے نام سے ایک کتاب کا ذکر ہے، لیکن یہ کتاب موجودہ عہد نامہ میں شامل نہیں۔

تقسیم
ذیلی تقسیم
پیشرفت
مخطوطات
مزید دیکھیے

دیگر زبانیں

This page is based on a Wikipedia article written by authors (here).
Text is available under the CC BY-SA 3.0 license; additional terms may apply.
Images, videos and audio are available under their respective licenses.