ساحلی جھیل

ساحلی جھیل (انگریزی: Lagoon) سمندر کے ساحلوں کے قرب و جوار میں اتھلے پانی کی ایک جھیل ہوتا ہے جو گہرے پانی سے جزائر صغیر یا سنگستان آبی کے ذریعے جدا ہوتے ہیں۔

بھارت کی ریاست اوڈیشا کے مشرقی ساحل پر چلکا اور نیلور کی پُلی کٹ جھیلیں، گوداوری اور کرشنا کے ڈیلٹاؤں کولیرو جھیل اسی طرح سے بنی ہیں۔ بھارت کی جنوب مغربی ساحل پر ریاست کیرلا میں بھی لا تعداد ساحلی جھیلیں پائی جاتی ہیں۔

مزید دیکھیے

بیرونی روابط

امریکی چھوٹے بیرونی جزائر

امریکی چھوٹے بیرونی جزائر (united states minor outlying islands) بحر اوقیانوس میں آٹھ امریکی علاقوں کے پر مشتمل ہے۔

اگستیہ

اگستیہ یا اگستیا (ہندی: अगस्त्य) ہندو مت میں ویدوں کے ایک مشہور دانشور (رشی) تھے۔ ہندوستانی روایات کے مطابق وہ ایک قابل ذکر سنیاسی اور برصغیر کی مختلف زبانوں میں ایک بااثر عالم تسلیم کیے گئے ہیں۔ وہ اور ان کی زوجہ لوپا مُدرا سنسکرت کی مذہبی کتاب رگ وید کے بھجن 1.165 تا 1.191 اور دیگر ویدی ادب کے مصنف ہیں۔اگستیہ کا نام متعدد داستانوں اور پرانوں (مثلاً دیومالائی کہانیوں اور علاقائی داستانوں) میں آتا ہے جن میں خاص طور پر رامائن اور مہا بھارت شامل ہیں۔ وہ ویدوں کے سات یا آٹھ انتہائی قابل احترام رشیوں میں سے ایک ہیں، اس کے ساتھ ساتھ ان کا ذکر شیو مت کی روایت تمل سِدّھار میں ایک سِدّھار کی حیثیت سے آتا ہے۔ علاوہ ازیں شکتی مت اور ویشنو مت کے پرانوں میں بھی ان کو بہت قابل قدر گردانا گیا ہے۔ نیز وہ ان ہندوستانی دانشوروں میں سے ایک ہیں جن کے قدیم مجسمے اور خاکے جنوبی ایشیا کے ہندو مندروں اور جنوب مشرقی ایشیا جیسے جاوا، انڈونیشیا وغیرہ میں ابتدائی قرون وسطیٰ میں تعمیر شدہ شیو کے مندروں میں دیکھنے کو ملتے ہیں۔ قدیم جاوی زبان کی تحریر، اگستیہ پرب میں وہ ایک بنیادی کردار اور استاذ کا درجہ رکھتے ہیں جس کا 11 ویں صدی کا نسخہ اب تک موجود ہے۔اگستیہ کو روایتی طور پر کئی سنسکرت تحریروں کا مصنف مانا جاتا ہے، جیسے اگستیہ گیتا کو وراہ پران میں پایا گیا، اگستیہ سمہیتا کو اسکند پران اور "دویدھ نرنئے تنتر" میں پایا گیا۔ علاوہ ازیں ان کی دیومالائی شخصیت کا حوالہ من، کلساج، کمبھاج، کمبھایونی اور میترا ورونی کی حیثیت سے بھی دیا جاتا ہے۔

بحر ہند میں بکھرے جزائر

بحر ہند میں بکھرے جزائر (Scattered Islands in the Indian Ocean) (فرانسیسی: Îles Éparses or Îles éparses de l'océan indien) چار چھوٹے مرجانی جزائر، مرجانی چٹانوں اور طبقہ حجری پر مشتمل ہیں۔

لاگوس

لاگوس (انگریزی: Lagos) نائجیریا کا سب سے بڑا شہر اور بندرگاہ ہے۔ شہر کی آبادی ایک سے ڈیڑھ کروڑ کے درمیان ہے، اس طرح یہ بر اعظم افریقا کے بڑے شہروں میں سے ایک ہے۔

یہ شہر 12 دسمبر 1991ء تک نائجیریا کا دارالحکومت رہا، جسے بعد ازاں ابوجا منتقل کر دیا گیا۔ اس شہر کا شمار ان شہروں میں ہوتا ہے جو ملک کا سب سے بڑا شہر ہونے کے باوجود دارالحکومت نہیں ہیں۔

مرجانی جل پتھر

مرجانی جل پتھر زمین کا سب سے دلکش اور متنوع بیئیاتی مسکن ہے۔ یہ عام طور پر ساحل کے قریب، کم گہرے سمندر میں پائے جاتے ہیں۔

پٹلم ساحلی جھیل

پٹلم ساحلی جھیل (Puttalam Lagoon) مغربی سری لنکا کے ضلع پُٹلم میں ایک 327 کلومیٹر2 (126 مربع میل) بڑی ساحلی جھیل ہے۔

زمین کی ہیئتیں
کوہستانی
ہیئتی
دریائی
گلیشیری
سمندری اور ساحلی ہیئتیں
لاوائی
ہوائی
مصنوعی

دیگر زبانیں

This page is based on a Wikipedia article written by authors (here).
Text is available under the CC BY-SA 3.0 license; additional terms may apply.
Images, videos and audio are available under their respective licenses.