دائرۃ المعارف

دائرۃ المعارف اُس قابلِ فہم خلاصہ کو کہاجاتا ہے جس میں علم کی تمام شاخوں یا کسی ایک مخصوص شاخ پر معلومات دی گئیں ہوں۔ یہ کئی موضوعات میں بٹی ہوتی ہے، جس میں ایک موضوع صرف ایک مضمون پر تفصیلی معلومات فراہم کرتا ہے۔ موضوعات کو دائرۃ المعارف میں حروفِ تہجّی کی ترتیب میں لکھا جاتا ہے۔ یہ ایک یا کئی جلدوں پر مشتمل ہوسکتی ہے، اِس کا اِنحصار اِس میں شامل معلومات پر ہے۔

Persian-encyclopedia
دائرة المعارف، فارسی زبان میں

وجہ تسمیہ

انسائیکلوپیڈیا اصل میں ایک یونانی لفظ ENKUKLOPAIDEIA سے اخذ کیا گیا ہے جس کے لغوی معنی، علم اور فن کے لحاظ سے کسی چیز کا سیکھنا اور سکھانا ہے، اردو میں انسائیکلو پیڈیا کے لیے عام طور پر ”دائرة المعارف“ اور قاموس العلوم جیسے الفاظ استعمال ہوتے ہیں۔ یہ اِصطلاح انگریزی لفظ انسائیکلوپیڈیا کا صحیح متبادل ہے ،[1] اور یہ دو عربی الفاظ کا مجموعہ ہے: ‘‘دائرۃ ’’ یعنی دائرہ اور ‘‘المعارف’’ یا ‘‘معارف’’ جس کا مطلب ہے قانون قدرت یا فطری اشیا کی واقفیت[2]. یہ اِصطلاح عربی [3] فارسی اور اُردو میں زیرِ استعمال ہے۔ اِس کے علاوہ دو اَور عربی اِصطلاحات موسوعہ [4] اور قاموس العلم[5] بھی اِن تینوں زبانوں میں استعمال ہوتے ہیں۔ اِس کے لیے اصل فارسی لفظ دانشنامہ ہے جو اُردو میں کسی اَور مفہوم میں استعمال ہوتا ہے (دیکھیے مقالہ دانشنامہ).

موسوعہ لکھنے والے شخص کو موسوعہ نویس کہاجاتا ہے[6].

مزید دیکھیے

حوالہ جات

  1. اُردو آن لائن لُغت پر انگریزی لفظ انسائیکلوپیڈیا کی معنی و مطلب
  2. اُردو آن لائن لُغت پر لفظ معارف کا مفہوم
  3. ایک عربی آن لائن لُغت پر انگریزی لفظ انسائیکلوپیڈیا کی معانی
  4. اُردو آن لائن لُغت پر لفظ موسوعہ کا مفہوم و مآخذ
  5. اُردو آن لائن لُغت پر قاموس العلم کا حوالہ
  6. اُردو آن لائن لُغت پر موسوعہ نویس کا حوالہ
آل مووی

آل مووی (AllMovie) (سابقہ All Movie Guide) فلم، ٹیلی ویژن پروگراموں اور سکرین اداکار کے بارے میں ایک آن لائن معلوماتی رہنمائی خدمات کی ویب سائٹ ہے۔

اردو ویکیپیڈیا

اردو ویکیپیڈیا آزاد دائرۃ المعارف ویکیپیڈیا کا اردو نسخہ ہے۔ جس کا آغاز 27 جنوری 2004ء کو ہوا۔ ستمبر 2019 سے اردو ویکیپیڈیا میں 148,610 مضامین، 100,395 مندرج صارفین اور 10,055 فائلیں ہیں اور یہ 50واں بڑا ویکیپیڈیا ہے۔

القانون فی الطب

القانون فی الطب علم طب، جراحی اور علم الابدان پر حکیم بوعلی سینا یا ابن سینا کی ایک مشہور تصنیف اور طبی معلومات کا سرچشمہ۔ اصل کتاب عربی میں ہے دنیا کی تمام بڑی زبانوں میں اس کے تراجم شائع ہوچکے ہیں۔ اس کتاب میں علاوہ جراحی و علاج معالجہ کے طب کے دیگر علوم (مثلا تشریح، فعلیات وغیرہ) کے ابواب بھی جابجا دیے گئے ہیں۔

انگریزی ویکیپیڈیا

انگریزی ویکیپیڈیا آزاد دائرۃ المعارف ویکیپیڈیا کا انگریزی نسخہ ہے جس کا آغاز 15 جنوری 2001ء کو ہوا۔ دسمبر 2018ء تک اس میں 5,934,169 مقالات موجود تھے۔

ایستریا

ایستریا یا استریا (Istria)(تلفظ: /ˈɪstriə/ ist-REE-ya) کروشیائی، سلووین: Istra; ایستریوت: Eîstria; اطالوی: Istria; جرمن: Istrien) بحیرہ ایڈریاٹک کا سب سے بڑا جزیرہ نما ہے۔ یہ تین ممالک کرویئشا، سلووینیا اور اطالیہ میں منقسم ہے۔

ایواریستوس

بطریق اعظم ایواریستوس (وفات ت 107ء) کو روم کا پانچواں اسقف سمجھا جاتا ہے، وہ تقریباً 99ء سے اپنی وفات تقریباً 107ء تک اپنے عہدے پر فائز رہے۔ وہ ارسطوس کے نام سے بھی جانے جاتے تھے۔ مشرقی راسخ الاعتقاد کلیسیا اور کاتھولک کلیسیا میں ان کو ایک مقدس مانا جاتا ہے۔

برتلمائی

برتلمائی (انگریزی: Bartholomew، یونانی: Βαρθολομαῖος Bartholomaíos، لاطینی: Bartholomaeus) یسوع کے بارہ رسل میں سے ایک تھے۔ ان کی نتن ایل سے نشان دہی کی گئی ہے، جو یوحنا کی انجیل میں ظاہر ہوتے ہیں جن کو فلپس نے یسوع سے متعارف کروایا تھا۔ [Jn 1:43-51]

اگرچہ کچھ جدید مفسرین نے نتن ایل اور برتلمائی کی ایک شناخت کو مسترد کر دیا ہے اور ان کے بیان کے مطابق وہ مختلف شخصیات ہیں۔

بمبئی پریزیڈنسی

بمبئی پریزیڈنسی یا بمبئی صوبہ یا بمبئی اور سندھ 1843 تا 1936 تک برطانوئی ہند کا انتظامی لحاظ سے ایک سب ڈویشن تھا۔ اس صوبے میں موجودہ بھارت کے ریاست گجرات،مہارشٹرا اور کرناٹکا کے علاقے اور پاکستانی سندھ اور یمن کے زیر انتظام عدن کالونی شامل تھی۔ اس کا دار الخلافہ بمبئی شہر ہوا کرتا تھا۔

بہار شریعت

بہار شریعت، مولانا محمد امجد علی اعظمی کی وہ کتاب جو دوسرے مصنفین کی جملہ تصانیف پر بھاری ہے۔ یہ ان کی معرکہ آرا تصنیف ”بہار شریعت“ ہے اس کتاب کے سبب وہ زندہ جاوید ہوئے اس کتاب میں انہوں نے فقہ حنفی کو اردو قالب میں ڈھال کر وقت کی اہم ضرورت کو پورا کیا ہے اس سے فائدہ حاصل کرنے والوں میں علماءعوام دونوں شامل ہیں مصنف فقہ اسلامی اور مسائل شرعیہ کو مکمل طور پر بیس جلدوں میں سمیٹنا چاہتے تھے مگر عمر نے ساتھ نہ دیا اور سترہ حصے لکھنے کے بعد دنیائے دار فانی سے 2 ذی قعدہ، 6ستمبر 1367ھ/1948ء دوشنبہ کو 12 بج کر 6 منٹ پر انتقال کر گئے اور وصیت کر گئے کہ اگر میری اولاد یا تلامذہ یا علمائے اہل سنت میں سے کوئی صاحب اس کا قلیل حصہ جو باقی رہ گیا ہے اس کو پورا کر دیں۔ چنانچہ ان کے شاگرد اور دیگر علماءبہار شریعت کے باقی تین حصے 18،19،20 ضبط تحریر میں لاچکے ہیں جو چھپ کر منظر عام پر آچکی ہیں۔ مصنف کی وصیت کے مطابق یہ خیال رکھا گیا ہے اور اس میں یہ اہتمام کیا گیا ہے کہ مسائل کے مآخذ کتب کے صفحات کے نمبر اور جلد نمبر بھی لکھ دیے ہیں تاکہ اہل علم کو مآخذ تلاش کرنے میں آسانی ہو اکثر کتب فقہ کے حوالہ جات نقل کردیے ہیں جن پر آج کل فتوی کا مدار ہے حضرت مصنف کے طرز تحریر کو حتی الامکان برقرار رکھنے کی کوشش کی گئی ہے۔ فقہی موشگافیوں اور فقہا کے قیل و قال کو چھوڑ کر صرف مفتی بہ یعنی جس پر فتوی ہے اقوال کو سادہ اور عام فہم زبان میں لکھا گیا ہے۔

دائرۃ المعارف الاسلامیہ

دائرۃ المعارف الاسلامیہ یا انسائیکلوپیڈیا آف اسلام (انگریزی: Encyclopaedia of Islam) انگریزی زبان میں مسلمانوں اور اسلامی موضوعات مثلا تاریخ اسلام پر مبنی ایک دائرۃ المعارف ہے۔ یاد رہے کہ یہ اسلام کا دائرۃ المعارف نہیں بلکہ اسلامی دنیا کے بارے میں ایک دائرۃ المعارف ہے۔ اسے تحقیقی دنیا میں ایک معیاری دائرۃ المعارف سمجھا جاتا ہے۔ اسے ہر موضوع پر بہترین ماہرین نے تحریر کیا ہے اور اسے مکمل ہونے میں چالیس سال کا عرصہ لگا۔ اسے پہلے پہل 1913ء سے لے کر 1938ء تک انگریزی، فرانسیسی اور آلمانی (جرمن) زبانوں میں شائع کیا گیا۔ بعد میں اس کے کچھ حصوں کا اردو، ترکی اور عربی زبانوں میں بھی ترجمہ ہو چکا ہے۔ اردو میں اسے مختصر اردو دائرہ معارف اسلامیہ کے نام سے جامعہ پنجاب (پنجاب یونیورسٹی) لاہور نے 1953ء سے 1993ء تک مختلف حصوں میں شائع کیا ہے۔

دائرۃ المعارف بریٹانیکا

دائرۃ المعارف بریٹانیکا (عربی: موسوعة بريتانيكا، فارسی: دانشنامہ بریتانیکا، انگریزی: British Encyclopaedia، لاطینی:Encyclopædia Britannica) ایک انگریزی زبان کا عمومی معلومات پر مشتمل دائرۃ المعارف ہے۔2010ء میں اسے شائع کرنے والے ادارے نے اعلان کیا تھا کہ، 2012ء کے بعد اس کی کاغذی طباعت بند کر دی جائے گئی۔ یہ سو سے زیادہ مرتبہ ترمیم شدہ حالت میں شائع ہوا، اسے 4،000 شخصیات نے لکھا، جن میں سے 101 نوبل انعام یافتہ اور 5 امریکی صدور بھی شامل تھے۔

بریطانیکا انگریزی زبان کا سب سے پرانا دائرۃ المعارف ہے جو ابھی بھی پیش کیا جا رہا ہے۔ پہلی بار ایڈنبرا، اسکاٹ لینڈ سے 1768ء سے 1771ء کے دوران میں تین جلدوں میں شائع کیا گيا۔ دائرۃ المعارف میں اضافہ کیا گيا اور دوسری طباعت دس (10) جلدوں میں اور چوتھی طباعت بیس (20) جلدوں میں (1801ءتا1810ء) چھپی۔ ایک علمی کام کی حثیت سے اس کی بڑھتی ہوئی مقبولیت کے سبب جلدی ہی نامور مصنفین کو بھرتی کیا گيا۔ نویں (1875–1889) اورگیارہ ویں (1911) طباعت اپنی ادبی و علمی انداز کی بدولت تاریخ ساز دائرۃ المعارف ہیں۔

ذخیرہ خوارزم شاہی

ذخیرہ خوارزم شاہی طب پر فارسی زبان میں ایک کتاب ہے جس کے مصنف زین الدین ابو ابراہیم اسمعٰیل بن حسن جرجانی (1041ء - 1136ء) ہیں، جو ابو لفتح قطب الدین محمد خوارزم شاہ بن انوشتگین خورزم شاہ (1227ء - 1196ء) کی طلبی پر خوارزم آیا۔ حسن جرجانی مختلف علوم میں مہارت رکھتا تھا۔ انہوں نے دواؤں، سمیات، امراض اور اس کی تشخیص پر یہ کتاب لکھی۔ اس میں دس کتابیں شامل ہیں اور ہر کتاب میں کئی کئی ابواب ہیں جو کئی گفتاروں پر مشتمل ہیں۔اس کتاب کو عالمِ اسلام میں طب پر اہم کتابوں میں شمار کیا جاتا ہے۔ اس کتاب کا اردو ترجمہ حکیم محمد ہادی خان مرادآبادی نے 1876ء میں کیا جو مطبع منشی نول کشور لکھنؤ میں طبع ہوا۔

معجم البلدان

معجم البلدان یہ شہاب الدین ابو عبد اللہ یاقوت بن عبد اللہ الحموی کی تالیف ہے۔ جو جائے پیدائش کے اعتبار سے حموی ،نسل کے اعتبار سے رومی اور سکونت کے اعتبار سے بغدادی ہیں۔ 626ھ میں حلب شہر کے باہر رباط میں وفات ہوئی۔

اس کتا ب کا موضوع یامقصد شہروں، پہاڑوں، وادیوں، جنگلوں، بستیوں، محلوں، علاقوں،دریاؤں،بتوں، مورتیوں اور سمندروں تک کے نام اور ان کا تعارف بیان کرنا ہے۔گویا یہ اپنے دور کا عربی میں ایک انسائیکلو پیڈیا ہے۔

ویکیپیڈیا

ویکیپیڈیا (انگریزی: Wikipedia) ویب پر مبنی ایک کثیر اللسان آزاد دائرۃ المعارف ہے جو ہر ایک کو ترمیم کرنے کی نہ صرف اجازت بلکہ دعوت بھی دیتا ہے۔ یہ دائرۃ المعارف انٹرنیٹ کا عظیم ترین، مشہور ترین اور مقبول ترین علمی مرجع خاص و عام ہے۔ الیکسا درجہ بندی کے مطابق یہ دنیا کی سب سے مقبول ویب سائٹوں میں سے ایک ہے۔ ویکیپیڈیا ویکیمیڈیا فاونڈیشن کی زیر سرپرستی اور اس کے تعاون سے چلتا ہے۔ ویکیمیڈیا فاونڈیشن ایک غیر منافع بخش تنظیم ہے جس کا ذریعہ آمدنی حصول سرمایہ کی سالانہ مہم سے حاصل ہونے والی رقومات ہیں۔15 جنوری 2001ء کو جیمی ویلز اور لیری سینگر نے ویکیپیڈیا کا آغاز کیا۔ سانگر نے ویکی اور انسائیکلوپیڈیا کے آمیختہ سے اس اس کا نام ویکیپیڈیا تجویز کیا اور یہی نام حتمی قرار پایا۔ ابتدا میں ویکیپیڈیا محض انگریزی زبان میں تھا لیکن جلد ہی دوسری زبانوں میں بھی اس کے نسخے وجود میں آگئے۔ پچاس لاکھ سے زائد مضامین پر مشتمل انگریزی ویکیپیڈیا بقیہ 290 سے زائد ویکیپڈیاؤں میں سب سے بڑا ہے۔ تمام ویکیپیڈیاؤں کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ کل 301 مختلف زبانوں میں 40 ملین سے زیادہ مضامین ہیں۔ یہی نہیں بلکہ 18 بلین صفحات اور تقریباً 500 ملین ماہانہ منفرد قارئین کا حامل ویکیپیڈیا دنیا کا سب زیادہ پڑھا جانے والا ماخذ ہے۔ یہ اعداد و شمار فروری 2014ء کے ہیں، جبکہ مارچ 2017ء تک ویکیپیڈیا پر تقریباً 40000 منتخب مضامین اور بہترین مضامیں موجود تھے جو متعدد و متنوع اہم موضوعات کا احاطہ کرتے ہیں۔ سنہ 2005ء میں نیچر نے ایک مقالہ شائع کیا جس میں دائرۃ المعارف بریٹانیکا اور ویکیپیڈیا کے 42 سائنسی مضامین کا موازنہ کیا گیا، جس میں یہ بات سامنے آئی کہ ویکیپیڈیا کے مضامین کا معیار دائرۃ المعارف بریٹانیکا کا ہم پلہ ہے۔ ٹائم رسالہ نے لکھا کہ ویکیپیڈیا کی ہر ایک کو ترمیم کرنے کی کھلی چھوٹ نے اس کو دنیا کا سب سے بڑا اور ممکنہ حد تک سب سے بہتر دائرۃ المعارف بنا دیا ہے جو دراصل جیمی ویلز کے خوابوں کی تعبیر ہے۔ویکیپیڈیا پر انتظامی تعصب، رطب و یابس اور غلط سلط معلومات فراہم کرنے اور متعدد موضوعات میں ہیرا پھیری کرنے کا الزام بھی لگایا گیا اور بعض متنازع موضوعات میں ویکیپیڈیا کے مضامین سخت تنقید کا نشانہ بھی بنتے رہے ہیں۔ سنہ 2017ء میں فیس بک نے اعلان کیا کہ وہ ویکیپیڈیا کے مضامین کے مناسب روابط فراہم کرکے قارئین کے سامنے جھوٹی خبروں کی نشان دہی کرے گا۔ نیز یوٹیوب نے بھی 2018ء میں ایسا ہی اعلان کیا جس کے جواب میں واشنگٹن پوسٹ نے سرخی لگائی، "ویکیپیڈیا انٹرنیٹ کا ایک اچھا داروغہ" ہے۔

پاکستان کرونیکل

پاکستان کرونیکل (پاکستان کا تاریخ وار عوامی انسائیکلوپیڈیا )، عقیل عباس جعفری کی تصنیف ہے جس میں قیام پاکستان سے لے کر 31 اگست 2011ء تک پاکستان کے تاریخ وار واقعات تحریر و تصویر کی صورت انتہائی خوبصورت اور سلیقے کے ساتھ پیش کیے گئے ہیں۔ اصل میں یہ کتاب ماہانہ ڈائری ہے جس میں سیاسی، صحافتی، ثقافتی، فنون لطیفہ، صنعت و حرفت اور کھیلوں کے علاوہ اہم ترین واقعات پر مشہور زمانہ کتب، رسائل و اخبارات سے اقتباسات بھی ہیں اور نامور پاکستانی شخصیات کی پیدائش و انتقال کے علاوہ مختصر تعارف بھی ہے۔

پومیرانیا

پومیرانیا (Pomerania)

(پولش: Pomorze; جرمن: Pommern) شمالی یورپ میں بحیرہ بالٹک کے جنوبی کنارے پر ایک خطہ ہے جو جرمنی اور پولینڈ میں منقسم ہے۔

کالب بن یفنہ

کالب (کبھی کبھی کالیب بھی لکھا جاتا ہے۔כָּלֵב، طبرابی ادائیگی: Kālēb؛ عبرانی اکیڈمی:Kalev) ایک شخصیت کا نام ہے جس کا ذکر عبرانی بائبل میں آیا ہے۔ عبارت میں وہ بنی اسرائیل کے میدان تیہ تک سفر کے دوران قبیلہ یہوداہ کے نمائندہ کے طور مذکور ہے۔ ان کا ایک ذکر قرآن مجید میں بھی پایا گیا، اگرچہ ان کے نام کا ذکر نہیں ہے۔

دیگر زبانیں

This page is based on a Wikipedia article written by authors (here).
Text is available under the CC BY-SA 3.0 license; additional terms may apply.
Images, videos and audio are available under their respective licenses.