تنک

تنک (عبرانی: תַּנַ"ךְ ؛ انگلش: Tanakh) یا "تناخ" یا "تنخ" اُس مجموعہ کا نام جس کو عبرانی بائبل کہا جاتا ہے اور جو یہودیت کا سب سے مقدس کتابی مجموعہ ہےـ اس کے تین اجزاء ہیں : تورات (درس)، نوییم (انبیا) اور کیتُوویم (کتب) ـ

تورات میں خدا کے احکامات کے علاوہ کائنات، عالم اور انسان کی تخلیق کا قصہ ہےـ اس کے علاوہ اس میں نوح کی نبوت اور سیلاب، ابراہیم کی نبوت اور خدا کے عہد اور دیگر انبیا کے قصص ہیں ـ تورات کا اختتام بنی اسرائیل کے کنعان میں داخلہ اور خدا کے عہد کی تکمیل پہ ہوتا ہےـ

نبییم میں موسیٰ کے کچھ مزید قصص بیان ہیں اور باقی تمام انبیاء کے قصے اور ان کے پیغام درج ہیں ـ یہ انبیا وقتاً فوقتاً خدا کی طرف سے بھیجے گئے تھے تاکہ بنی اسرائیل اپنے عہد پہ پورا اترےـ نیوییم کے اختتام تک بنی اسرائیل ناکام ہوا اور خدا کا عذاب حاصل کر گیا ـ

کتبیم زبور سے شروع ہوتی ہےـ اس میں داؤد اور سلیمان کے علاوہ دیگر پیغمبروں کا ذکر ہےـ اس کے علاوہ اس میں مملکت یہوداہ کی تاریخ اور عروج بھی بیان ہےـ اس کا اختتام بنی اسرائیل کی توبہ اور خدا کے عہد کی بحالی پہ ہوتا ہے۔

Targum
گیارہویں صدی کے تنک کا ایک صفحہ مع ترجُم

مزید دیکھیے

اسماعیل

اسماعیل (عبرانی: יִשְׁמָעֵאל، جدید Yishma'el ، طبری Yišmāʻēl ISO 259-3، Yišmaˁel; یونانی: Ἰσμαήλ ; عربی: إسماعيل ʾIsmāʿīl; لاطینی: Ismael) قرآن اور تنک کی ایک برگزیدہ شخصیت،اسلام، یہودیت اور مسیحیت کے مطابق ابراہیم کے پہلے بیٹے، عام یہودی روایت کے مطابق اسماعیل کی پیدائش ابراہیم اور سارہ کی لونڈی ہاجرہ کے ہاں ہوئی،(Genesis 16:3) بعض یہودی اور اکثر مسلمان اہل علم کے نزدیک ہاجرہ فرعون کی لونڈی نہیں، بلکہ حقیقی بیٹی تھی۔ بائبل کی کتاب گنتی کے مطابق اسماعیل کی وفات 137 سال کی عمر میں ہوئی۔ (Genesis 25:17).

انبیائے صغری

انبیائے صغریٰ (آرامی زبان: תרי עשר‎‎r) سے مراد وہ انبیا ہیں جن کے مختصر الہامی صحائف بائبل میں موجود ہیں۔ یہ مختصر صحائف تعداد میں 12 ہیں۔ بائبل کا تیسرا حصہ نبییم کہلاتا ہے جس میں یہ 12 مختصر صحائف موجود ہیں۔ عموماً نبییم کو ہی کتاب صغار انبیا کہہ دیا جاتا ہے۔

ترجم

ترجُم (عبرانی: תרגום)‎ تنک کا آرامی ترجمہ جسے یہود ربیوں نے دوسرے انتشار کے بعد لکھا۔ جس وقت آرامی زبان یہود کے مابین رواج پزیر ہوچکی تھی اور عبرانی زبان صرف عبادات و رسوم تک محدود ہوچکی تھی۔

جب بنی اسرائيل اسیری سے واپس آئے تو عزرا فقیہ نے شریعت کا عبرانی نسخہ ان کے سامنے پڑھا تھا۔ لیکن چونکہ عوام الناس عبرانی سے ناواقف تھے اور ارامی زبان ہی جانتے تھے لہذا لاوی ان کے معنی بتاتے "اور اُن پڑھی ہوئی باتوں کی عبارت ان کو سمجھاتے تھے۔"(نحمیاہ 8: 1تا 8) مابعد کے زمانہ میں یہ باقاعدہ دستور بن گیا اور چونکہ عوام الناس عبرانی سے ناواقف تھے۔ لہٰذا عبادت خانوں میں پہلے عبرانی نسخہ کی ایک ایک آیت پڑھی جاتی تھی، پھر ایک اور شخص جو "ترجمان" کہلاتا تھا، اس آیت کا ارامی زبان میں ترجمہ کرکے اپنے الفاظ میں اہلِ یہود کے خصوصی عقائد کے مطابق اس عبارت کو سمجھاتا تھا۔ مترجم کو حکم تھاکہ وہ کوئی کتاب استعمال نہ کرے تاکہ لوگ الہامی عبرانی عبارت میں (جو کتاب میں لکھی ہوتی تھی) اور زبانی ترجمہ کے الفاظ میں تمیز کرسکیں۔ اس ترجمہ شدہ توضیحی ارامی عبارت کا نام یہودی اصطلاح میں "ترجم" (بمعنی مفصل ترجمہ) ہے۔ بعد میں یہ توضیحی تشریحیں احاطہ تحریر میں آئیں جو کنعان و بابل کے مدرسوں کے استادوں نے لکھیں۔ ان میں زيادہ مشہور اونکیلوس یا ایکولا (Onkelos or Aquila) کا "بابلی ترجم" (از 100ء تا 200) ہے جو زیادہ تر تورات کے اس متن کا لفظی ترجمہ ہے جو بابل کے دار العلوم میں مستعمل تھا۔

راسخ العقیدہ یہودیت

راسخ العقیدہ یہودیت (انگریزی: Orthodox Judaism) یہودیت کا ایک فرقہ ہے جو تورات، تلمود اور تنائیم کی روایت اور قوانین اور اخلاقیات پر عمل پیرا ہے۔

راشی (یہودی مفسر)

سلومو اسحاق (عبرانی: רבי שלמה יצחקי) (لاطینی: Salomon Isaacides) قرون وسطیٰ کا ایک فرانسیسی نژاد یہودی مفسر تھا۔ سلومواسحاق کو آج کل مختصر نام راشی (عبرانی:רש"י) کے نام سے جانا جاتا ہے۔ اس کی وجہ شہرت تلمود اور تنک کی نابغہ تفسیر ہے۔ بلاشبہ اس کی یہ صلاحیت قابل ستائش ہے کہ متن کے بنیادی معنی نہائت بلیغ اور جامع انداز میں بیان کرتاہے۔ اس کی تحریریں یہودی علما اور ابتدائی طلبہ کے لیے نہائت اثر انگیز ہیں حتیٰ اس کی تفسیر یہودیت کی تعلیم میں معاصرانہ محور کی حامل ہے۔ تلمود پر لکھی گئی تفسیر کہ جو 30 سے زائد رسالوں کا مجموعہ ہے پہلی اشاعت سے اب تک ہر طباعت میں شامل کی جا رہی ہے۔ اس تفسیر کی پہلی اشاعت 1520ء کی دہائی میں ہوئی تھی۔ اس پہلے ناشر کا نام دانیال بامبر گ تھا۔

اس کی تفسیر برائے تنک اور بالخصوص موسیٰ کی کتب خمسہ بنیادی طلبہ کے لیے بنیادی ضرورت ہیں۔

زکریا بن یہویدع

زکریا بن یہویدع /zɛkəˈraɪ.ə/ (عبرانی: זְכַרְיָה בן יהוידע، جدید Zichariah Ben Yehoyada ، طبری Zəḵaryā; عربی: زكريّا بن يهوياداع Zakariya bin Yehuyada) کا تنک کے انبیا میں شمار ہوتا ہے۔ اور ان کا ممکنہ طور پر عہد نامہ جدید میں ذکر ہے۔ یہ اپنی شہادت کی وجہ سے جانے جاتے ہیں۔ اور جب یروشلم کا ماحاصرہ بخت نصر نے کیا تھا تو اپ نے اس وقت ایک معجزہ کرکے یروشلم کو آزاد کراویا تھا

۔

طبری عبرانی

طبری عبرانی (انگریزی: Tiberian Hebrew) قدیم یہودا میں یہودی طبریہ برادری مسوراتی علماء کی تحریر کردہ تنک کے لیے مذہبی طبری تلفظ صوتی ہے۔

عبرانی بائبل

(لاطینی: Biblia Hebraica) عبرانی بائبل (Hebrew Bible یا Hebrew Scriptures) بائبل کے علما کی جانب سے تنک (عبرانی: תנ"ך‎) کے لیے استعمال کی جانے والی اصطلاح ہے۔

عوبید

تنک میں؛ اوبید (عبرانی:עוֹבֵד، ‘Ōḇêḏ ; "عبادت گزار")، عہد نامہ قدیم میں اس نام کی پانچ مختلف شخصیات کا ذکر ہے۔

سیسان کی اولاد سے ایک شخص۔(کتاب تواریخ۔1)

داؤد کی فوج کا ایک سپاہی۔(کتاب تواریخ۔1)

داؤد کے زمانہ میں خیمۂ احتماع کا ایک دربان۔(کتاب تواریخ۔1)

عزریاہ کا باپ۔ (کتاب تواریخ۔2)

بوعز اور روت کا بیٹا، داؤد بادشاہ کا دادا، مسیحی عہد نامہ جدید کے مطابق یہ یسوع مسیح کے نسب نامہ میں آتا ہے۔(متی کی انجیل، لوقا کی انجیل اور روت و کتاب تواریخ۔1)

عہد نامہ قدیم

عہدنامہ قدیم ایک مسیحی اصطلاح ہے جو کتاب مقدس کے ایک بڑے حصہ کے لیے استعمال کی جاتی ہے، اس میں یہود کی تمام کتابیں بشمول تورات (شروع کی پانچ کتابیں) شامل ہیں۔ عہدنامہ قدیم تنک کے نام سے مشہور ہے۔ اس کے تین اجزاء ہیں: تورات (قانون)، نبییم (انبیا) اور کتُبیم (کتب)۔

کاتھولک اور راسخ الاعتقاد کلیسیاؤں کے مطابق عہدنامہ قدیم 46 کتابوں پر مشتمل ہے، جنہیں اسفار بھی کہا جاتا ہے۔ جبکہ پروٹسٹنٹ اور یہود کے نزدیک اس مجموعہ میں محض 39 کتابیں ہیں، یہود نے اس مجموعہ میں صرف ان کتابوں کو شامل کیا ہے جو عبرانی زبان میں مدون ہوئے تھے، اس کے علاوہ یونانی زبان میں ترتیب پانے والی دیگر کتابیں ان کے نزدیک مذہبی وقانونی استناد کا درجہ نہیں رکھتیں۔

فینحاس

تنک کے مطابق فینحاس (عبرانی: פִּנְחָס‬) ہارون کے پوتے اور الیعزر کے فرزند تھے۔ وہ بنی اسرائیل کے خروج کے سفر کے ایام میں ایک مذہبی کاہن تھے۔ اوہ ایک اعلیٰ درجہ کے کاہن تھے۔ ان کو غیر اخلاقیات سے سخت ناپسندیدگی تھی۔ فینحاس جب اپنے دور شباب میں تھے اس وقت ان کا قیام سطیم میں تھا وہ جہاں بعل فغور یا فغور دیوتا کے خلاف مرد آہن بن کر کھڑے ہوئے۔ ان کے زمانے میں اہل موآب اور اہل مدین نے اسرائیلیوں کو فغور کی بدعت اور غیر اسرائیلیوں میں شادی کی آزمائش میں ڈال دیا۔ ان کی طرف سے یہ ایک کامیاب کوشش تھی جس کی فینحاس نے پرزور مخالفت کی۔ انہوں نے ایک اسرائیلی مرد اور مدین کی عورت کو سزائے موت دے دی کیونکہ وہ دونوں مردوں کے خیمہ میں پائے گئے تھے۔ ایک اسرائیلی مرد اور مدینی عورت کے درمیان میں جنسی رشتہ خدا کو پسند نہیں آیا اور ان کے کے چونکہ اس گناہ کی وجہ سے طاعون کی وبا عام ہو گئی لہذا فینحاس نے خدا کے اس عذاب کو ٹالنے کے لیے برچھہ سے مرد اور عورت کو قتل کر دیا۔

فینحاس نے بنی اسرائیل میں بت پرستی روکنے کی خوب کوشش کی۔ یہ بت پرستی مدیانی عورت کی دین تھی۔ انہوں نے خدا کی پناہگاہوں کی بے حرمتی کرنے سے بھی اپنی قوم کو روکا۔ ارض اسرائیل میں داخلہ اور اپنے والد کی وفات کے بعد ان کو اسرائیل کا تیسرا بڑا مذہبی پیشوا یا کاہن مقرر کیا گیا۔ مشرقی راسخ الاعتقاد کلیسیا ان کو ایک ”مقدس“ (ولی) مانتی ہے اور ان کے یہاں 2 ستمبر کو ان کی یادگار منائی جاتی ہے۔

مدراش

مدراش (/ˈmɪdrɑːʃ/ عبرانی: מדרש‎ تنک کے ہر جزو پر موجود تعلیقات و تشریحات کا مجموعہ ہے۔ بعض اجزاء تو چند جملوں پر ہی مشتمل ہے۔ تلمود میں بھی اس کے کچھ حصے پائے جاتے ہیں۔

ملاکی

ملاکی یا ملاخی (عبرانی میں:מַלְאָכִי، یونانی میں :Μαλαχίας، جس کے معنی و مفہوم مختلف حوالوں ، زاویوں اور عقیدوں کی رو سے «خدا تک پہنچانے میں مددگار یا بسا اوقات خدا کی مدد پہنچانے میں مددگار اور کہیں خدا کو پہنچانے والا») کا ذکر عہد عتیق، عبرانی تنک میں بیان کیے گئے پیغمبروں کے ضمن میں آتا ہے۔ اور انہیں انبیائے صغری میں سے گردانا جاتا ہے۔ ملاکی کا تعلق قبیلہ زبولون سے بتایا جاتا ہے اور زمانہ پیدائش یہودی قوم کے سائرس اعظم کی دلائی آزادی یا اس کی دی آزادی (سائرس اعظم کے عہد میں یہودیوں کو اسرائیل جو ہخامنشی سلطنت کا حصہ تھا واپس جانے اور اپنے معابد دوبارہ تعمیر کرنے کی اجازت دی گئی تھی) سے بعد کا بیان کیا گیا ہے۔ ملاکی نحمیاہ اور عزرا کے ہم عصر تھے۔ اور ان کا دور نبوت حجی اور زکریاہ کے بعد کا ہے۔ ملاکی کے عہد میں بنی اسرائیل عشر اور ہدیہ جات (برائے ہیکل) ادا نہیں کرتے تھے۔ وعدہ سبت کو بھلا چکے تھے اور تقدیس سبت سے نا آشنا ہو چکے تھے۔ یہودی مرد غیر یہودی عورتوں سے شادیاں کرنے لگے تھے اور بنی اسرائیل کے کاہنوں میں رشوت خوری عام ہو چکی تھی۔ ملاکی نے یہودیوں کو غیر یہودی عورتوں سے شادیاں کرنے سے گریز کرنے کو کہا اور انہیں حرمت سبت اور باقی تمام انحراف کردہ یا فراموش شدہ قوانین و شعائر شریعت موسوی پر عمل کرنے کی ترغیب و ہدایت دی۔ یہودی روایات میں آتا ہے کہ ملاکی عہد نحمیاہ کے کاہنوں میں سے تھے اور وہ انہیں یروشلیم کی تعمیر نو کرنے والا تسلیم کرتے ہیں۔ یہودی ملاکی کی کتاب کو وحی الہی قرار دیتے ہیں۔ ملاکی کی کتاب ایک طویل نظم پر مشتمل ہے۔ ملاکی کا انتقال یروشلیم میں ہوا۔ ملاکی کو بہت سے فلسفی، علما اور مفسرین عہد عتیق کا آخری پیغمبر قرار دیتے ہیں۔

پانچ طومار

پانچ طومار یا پانچ میگلوتھ (عبرانی: חמש מגילות‎؛ [χaˈmeʃ meɡiˈlot]، ہامش میگلوتھ یا چومیش میگلوس) کتبیم (تحریریں) کا ایک حصہ ہے۔ کتبیم تنک (تناخ) یعنی عبرانی کتاب مقدس کا تیسرا بڑا حصہ ہے۔ اس حصہ میں کتاب غزل الغزلات، روت، نوحہ، واعظ اور کتاب آستر شامل ہیں۔

کتاب باروک

کتاب باروک یا باروک کی کتاب (انگریزی: Book of Baruch) ایپوکریفا عہد نامہ جدید کی فہرست میں شامل ایک کتاب ہے۔ یہ ہفتادی ترجمہ میں نوحہ اور کتاب یرمیاہ کے درمیان ہے۔ یہ کتاب باروک بن نیریاہ نے آخری ایام بابل میں جلاوطنوں کی تسلی کے لیے لکھی، عام طور پر اس کا زمانۂ تصنیف 50ء سے 100ء کے درمیان مانا جاتا ہے۔

کتاب جوبلی

کتاب جوبلی یا پیدائش صغیر (چھوٹی پیدائش) ایک قدیم یہودی مذہبی کتاب ہے۔ یہ کتاب 50 ابواب پر مشتمل ہے۔ جس کو حبشی راسخ الاعتقاد توحیدی کلیسیا اور یہود فلاشا (یا بِیٹا اسرائیل) مسلمہ کتاب سمجھتے ہیں۔ حبشی یہودیوں میں اس کتاب کو ”کتاب قسمت یا بازدید“ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ (گیزر : መጽሃፈ ኩፋሌ Mets'hafe Kufale)۔ جوبلی کو پروٹسٹنٹ، مشرقی آرتھوڈوکس اور رومی کاتھولک کلیسیا کلیسیا من گھڑت تحریر سمجھتے ہیں

کتاب عاموس

یہ کتاب 740 سے 793 قبل مسیح میں لکھی گئی۔

کتبیم

کتبیم (بائبلی عبرانی: כְּתוּבִים Kəṯûḇîm، "تحریریں") تورات (ہدایت) اور نبییم

(انبیا) کے بعد یہ تناخ (عبرانی بائبل) کا تیسرا اور حتمی حصہ ہے۔

یہودی گروہ
مذہبیتحریکیں
فلسفہ
مذہبی متون
مقامات
رہنما
احکام
ثقافت
مسائل و دیگر
زبانیں
مذہبی مضامین
اور دعاہیں
یہودیت دیگر مذاہب کے ساتھ تعلقات
تاریخ
سیاست
ضد سامیت
مشہور آسمانی کتابیں
بائبل اور اور تاریخی بنی اسرائیل

دیگر زبانیں

This page is based on a Wikipedia article written by authors (here).
Text is available under the CC BY-SA 3.0 license; additional terms may apply.
Images, videos and audio are available under their respective licenses.