بین الاقوامی معیاری کتابی عدد

بین الاقوامی معیاری کتابی عدد (International Standard Book Number) ایک منفرد عددی تجارتی کتابی شناختگر ہے جو نو ہندسوں پر مشتمل ہوتا ہے جسے معیاری کتابی عدد (SBN) کہتے ہیں۔ اس ترمیز کے موجد گارڈن فوسٹر تھے۔

دس ہندسوں کے بین الاقوامی معیاری کتابی عدد کو بین الاقوامی تنظیم برائے معیاریت نے 1970ء میں بنایا اور اسے بطور بین الاقوامی معیار 2108 کے طور پر متعارف کروایا۔ لیکن نو ہندسوں کا ایس بی این ترمیز برطانیہ میں 1974ء تک نافذ رہا۔ نو ہندسوں کے معیاری عدد کو عدد "صفر" کا اضافہ کر کے آئی ایس بی این بنایا جا سکتا ہے۔ موجودہ دور میں آئیسو TC 46/SC 9 نے آئی ایس بی این کی ذمہ داری لی ہوئی ہے۔

یکم جنوری 2007ء سے آئی ایس بی این تیرہ ہندسوں پر مشتمل ہے اور اس کی شکلبندی "بکلینڈ ای اے این-13ایس سے مطابقت رکھتا ہے۔

عام طور پر زیادہ نجی نشریاتی اداروں کی کتابیں آئی ایس بی این عدد کے بغیر شائع کی جاتی ہیں یا ناشر آئی ایس بی این طریقہ کار کا خیال نہیں کرتا، تا ہم یہ اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہے اور بعد میں بھی بھی اس کا حل نکالا جا سکتا ہے۔

اسی طرح کا ایک اور بین الاقوامی معیاری سلسلی عدد (ISSN) اکثر سلسلہ وار جرائد وغیرہ کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

EAN-13-ISBN-13
ایک 13-ہندسوں کا عدد آئی ایس بی این عدد، 978-3-16-148410-0، پیش کردہ ای این اے -13 بار کوڈ

بیرونی روابط

24 (ٹی وی سیریز)

24، فوکس نیٹ ورک کی پیش کردہ ایک امریکی ٹیلی ویژن سیریز ہے۔ سیریز کا مرکزی کردار کاؤنٹر ٹیررسٹ یونٹ (سی ٹی یو / ادارہ انسدادِ دہشت گردی) کا ایجنٹ جیک باور ہے، جسے کیفر سدھرلینڈ نے نبھایا ہے۔ سیریز کا ہر دور (سیزن) 24 قسطوں پر مشتمل ہوتا ہے اور ہر دور جیک باور کی زندگی کے کسی ایک اہم ترین دن کی روداد پر مشتمل ہوتا ہے۔ ہر قسط اُس دن کے ایک گھنٹے میں پیش آنے والے واقعات کی کہانی بیان کرتی ہے۔

سیریز کا افتتاح 6 نومبر 2001ء کو ہوا۔ 24 مئی 2010ء کو اس کے آٹھویں اور حتمی دور کے ساتھ 192 اقساط مکمل ہوئیں۔ بعد ازاں فوکس نے مئی 2013ء میں اعلان کیا کہ 24 کی 12 اقساط پر مشتمل دور کے ساتھ واپسی ہوگی جس کا عنوان 24: زندگی ایک اور دن (انگریزی: Live Another Day) رکھا گیا۔ یہ دور 5 مئی تا 14 جولائی 2014ء نشر ہوا۔علاوہ ازیں، چھٹے اور ساتویں دور کے درمیانی وقفے میں ایک ٹیلی ویژن فلم 24: ریڈمپشن (انگریزی: Redemption؛ اردو: نجات) بھی نشر کی گئی۔

سیریز کا آغاز کاؤنٹر ٹیررسٹ یونٹ کی لاس اینجلس شاخ میں جیک باور کے بطور ایجنٹ کام کرنے سے ہوتا ہے، جہاں اُس کی پہچان ایک بہترین اور اپنے کام میں ماہر ایجنٹ کی ہے جو قومی مفادات کے تحفظ کے لیے کسی کی پروا نہیں کرتا اور نہ ہی اُصولوں کو خاطر میں لاتا ہے۔ عموماً تمام ادوار میں جیک مختلف قسم کے تخریبی منصوبے ناکام بنانے کے لیے سرگرم نظر آتا ہے، جن میں صدارتی امیدوار کے قتل کی کوشش، جوہری ہتھیاروں کا استعمال، سائبر حملے شامل ہیں۔

24 کا شمار مقبول ٹیلی ویژن سیریز میں ہوتا ہے۔ اسے کئی ایوارڈوں سے بھی نوازا گیا، جن میں 2003ء گولڈن گلوب ایوارڈز میں بہترین ڈراما سیریز اور 2006ء پرائم ٹائم ایمی ایوارڈز میں نمایاں ڈراما سیریز کا ایوارڈ شامل ہے۔ تاہم، ظلم و تشدد کے مناظر فلمانے اور مسلمانوں کو منفی روپ میں پیش کرنے کرنے پر سیریز تنقید کا نشانہ بھی بنتی رہی ہے۔

آٹھویں دور کے اختتام پر، 24 نے تاریخ کے طویل ترین امریکی جاسوس ڈراما سیریز کا اعزاز اپنے نام کر لیا۔

آنند مٹھ

آنند مٹھ ایک بنگالی زبان میں لکھی گئی ناول ہے۔ اس کے مصنف بنکم چندرا چتوپادھیائے تھے۔ انھوں نے اسے 1882ء میں لکھا تھا۔ سنیاسی باغیوں کے پس منظر میں لکھی گئی یہ ناول بھارتی اور بنگالی ناولوں میں سب سے معروف سمجھی جاتی ہے۔اس میں بھارتیوں کو گوروں سے آزادی حاصل کرنے کا کہا گیا ہے جبکہ برطانوی دور میں اس پر پابندی عائد کی گئی تھی۔ نیز اس ناول میں وندے ماترم کا ترانہ بھی شامل ہے اس ناول میں مسلمانوں کو دشمن ظاہر کیا گیا ہے جبکہ اس دور میں بنگال پر برطانیہ کی حکومت تھی۔

اکھے پاتر

اکھے پاتر (گجراتی: અખેપાતર) (اردو: اتھاہ برتن) ایک گجراتی زبان کا ناول جسے بِندُو بھٹ نے لکھا ہے۔ اس کتاب کو 2003 میں گجراتی زبان کا ساہتیہ ایوارڈ عطا کیا گیا تھا۔ اس کتاب کو کئی ناقدین نے سراہا ہے جن منسکھ سلا اور چندراکانت ٹوپی والا شامل ہیں۔

زندگی کے بعد زندگی (کتاب)

زندگی کے بعد زندگی (انگریزی: Life After Life) ایک ماہر نفسیات ریمنڈ موڈی کی لکھی ہوئی کتاب ہے۔ یہ اصل میں 150 افراد کے بوقت مرگ کی گفت و گو (انٹرویو) کا ایک معیاری جائزہ (رپورٹ)ہے، جو قریب الموت تجربات پر مشتمل ہے۔ کتاب کو مصنف نے ایسے پیش کیا ہے جیسے کہ موت واقع ہوتی ہے۔ ان افراد سے ملنے والی معلومات کی بنیاد پر موڈی نے کچھ اہم نکات جو مشترک تھے ان کی نشاہدہی کی ہے:

موت کی صورت میں انسان انتہائی کرب سے دوچار ہوتا ہے۔

ایک زبردست سکون اور بہبود، بشمول درد سے آزادی۔

خود کو اپنے مادی جسم سے باہر کھڑے ہونے کا تاثر۔

کبھی ایک سرنگ کی طرح نظر آتی شے میں تیرنے یا اندھیرے کا منظر۔ (جس کے بعد)

ایک سنہری روشنی سے آگاہی ہوتی ہے۔

شاید کوئی سامنے موجود ہے جیسے روشنی (نور) سے بات کر رہا ہو۔

تیزی سے ماضی کو دیکھنے، محسوس کرنے کا احساس۔

سامنے ایک خوبصورت دنیا کا نظر آنا۔

اس کتاب کے دنیا بھر میں 13 ملین نسخے بکے۔ ایک درجن غیر ملکی زبانوں میں ترجمہ کیا گیا۔ اور کتاب ایک بین الاقوامی سب سے زیادہ بکنے والی کتاب بن گئی۔ اس کتاب کی بدولت قریب المرگ حالات کا جائزہ لینے کا راستہ کھول دیا، جو جلد ہی ایک دلچسپ موضوع بن کر سامنے آیا۔

سمندر اور بوڑھا

سمندر اور بوڑھا (انگریزی: The old man and the sea) ہیمنگوئے کا وہ شہر آفاق ناول ہے جو اس نے کیوبا میں 1951ء میں لکھا اور ایک برس بعد 1952ء میں منصۂ شہود پر آیا۔ یہ وہ آخری اہم ترین ادبی تخلیق تھی جو ہیمنگوئے کی زندگی میں ہی شائع ہوئی۔

1953ء میں بوڑھا اور سمندر ناول کو پلٹزر انعام برائے فکشن ملا جبکہ 1954ء میں ارنسٹ کو نوبل انعام برائے ادب سے نوازا گیا۔

سوپنا تیرتھ

سوپنا تیرتھ (گجراتی: સ્વપ્નતીર્થ) رادھے شیام شرما کی جانب سے لکھا گیا ایک گجراتی کا ناول ہے۔ اسے 1979 میں شائع کیا گیا تھا۔ اس ناول نے گجراتی ادب پر اپنی گہری چھاپ چھوڑی ہے۔

شاہ قلی خان (گورنر)

شاہ قلی خان (انگریزی: Shah Quli Khan) 16 صدیمغلیہ سلطنت کے اہلکار، گورنر اور فن کے دلدادہ تھے۔ شاہ قلی خان نے نارنول, بھارت میں مغلیہ سلطنت کے گورنر کے فرائض سر انجام دیے۔ اپنی گورنری کے دوران شاہ قلی خان نے ریاست میں بہت سی مشہور عمارات تعمیر کرائیں۔

شیطانی بائبل

شیطانی بائبل 1969ء میں اینٹون لاوی کی جانب سے شائع مضامین، مشاہدات اور رسوم کا مجموعہ ہے۔ یہ لاوی شیطانیت کا مرکزی مذہبی متن ہے اور اسے اس کے فلسفے اور عقیدے کی بنیاد سمجھا جاتا ہے۔

عبد الرحمان بن ناصر سعدی

عبد الرحمان بن ناصر سعدی (1889ء تا 1956ء) ایک مسلمان عالم دین، فقیہہ، مفسر اور عربی قواعد کے ماہر ہونے کے ساتھ ساتھ شاعری کا بہت شغف رکھتے تھے انہوں نے مختلف موضوعات پر بہت کام کیا۔

فیرو (ناول)

فیرو (گجراتی: ફેરો) (اردو: سَیر) رادھے شیام شرما کے قلم سے لکھا جانے والا گجراتی ناول ہے۔ یہ گجراتی ادب میں اپنی تجرباتی نوعیت کے لیے مشہور ہے۔ اسے موجودہ گجراتی ناول نگاری میں سنگ میل کی حیثیت حاصل ہے۔ اس کے بعد شرما نے ایک اور تجرباتی ناول سوپناتیرتھ 1979 میں لکھا۔ اس کی اشاعت ریکھا پرکاشن، احمد آباد کی جانب سے 1968 میں ہوئی۔ اس ناول کا نام سمن شاہ کے تنقیدی کام چندرکانت بخشی تھی فیرو (1973) میں مذکور ہے۔

مرن اتر

مرن اتر یا مرنوتر (گجراتی: મરણોત્તર؛ اردو: بعد از مرگ) سریش جوشی کی لکھی گجراتی ناول ہے۔ یہ مکمل ناول تقریباً بعد کے دور نغمہ جاتی نثر میں لکھا گیا ہے۔

ملیلا جیو

ملیلا جیو (گجراتی: મળેલા જીવ) (اردو: متحدہ ارواح) ایک گجراتی زبان کی رومانی ناول ہے جسے پنالال پٹیل نے لکھا ہے۔ یہ کنجی اور جیوی کے رومانی المیے کا بیان ہے جو دو مخلف ذاتوں سے تعلق رکھتے تھے اور ان کی مشکلات کا احاطہ کرتا ہے۔

نوبل انعام یافتہ مسلمان شخصیات کی فہرست

2018 تک ، نوبل انعام یافتہ بارہ اراکین مسلمان رہے ہیں ، اکیسویں صدی میں نصف سے زیادہ۔ بارہ انعام یافتہ افراد میں سے سات کو نوبل امن انعام سے نوازا گیا ہے ، جبکہ تین سائنس دانوں کے لئے ہیں۔ طبیعیات میں 1979 کے نوبل انعام حاصل کرنے والے ، عبد السلام ، پاکستان کی احمدیہ برادری کے ایک ممبر تھے۔ عزیز سانکار ترکی کا دوسرا نوبل انعام یافتہ ہے اور اسے سال 2015 میں سالماتی حیاتیات کے شعبے میں کیمسٹری میں نوبل انعام سے نوازا گیا تھا۔

چھن پتر

چِھنّ پَتْر (گجراتی: છિન્નપત્ર) (اردو: پھٹا ہوا خط) سریش جوشی کا گجراتی ناول ہے۔

کتاب حقائق عالم

کتاب حقائق عالم (the world factbook) جسے سی آئی اے کتاب حقائق عالم (the cia world factbook) بھی کہا جاتا ہے دنیا کے بارے میں معلومات ہیں جسے سنٹرل انٹیلی جنس ایجنسی مرتب کرتی ہے۔

کرن گھیلو

کرن گھیلو: گجرات کا آخری راجپوت حکمران (گجراتی: કરણ ઘેલો) ایک گجراتی میں لکھا جانے والا تاریخی ناول ہے۔ اس کے مصنف نندشنکر مہتا تھے۔ اسے 1866 میں شائع کیا گیا تھا۔ خالص گجراتی زبان کے اولین ناول کے طور پر اسے کافی شہرت حاصل ہے۔ اسے سب سے پہلے 1866 میں شائع کیا گیا۔ اس کتاب کا انگریزی ترجمہ 2015 میں شائع ہوا۔

اس ناول میں کرن کی تصویرکشی کی گئی ہے جو گجرات کے آخری واگھیلا حکمران (1296–1305) تھے۔

وہ علا الدین خلجی کی ترک افواج کے ہاتھوں 1298 میں شکست سے دوچار ہوتے ہیں۔ یہ ناول تعلیمی غرض سے لکھا گیا ہے۔ یہ کئی تاریخی مآخذ پر مبنی ہے۔ تاہم مصنف نے کچھ واقعات کے لکھنے میں آزادانہ موقف اختیار کیا۔ یہ ناول سماجی اور مذہبی معاملات سے جوجتا ہے۔

یہ کتاب کی کافی پزیرائی ہوئی اور اسے مراٹھی اور انگریزی میں ترجمہ کیا گیا۔ اسی کی بنیاد پر ناٹک اور فلمیں بھی بنائے گئے۔

گووبیاو معیارات

گووبیاو معیارات (Guobiao standards) چینی قومی معیار ہیں جو چین کی معیار سازی انتظامیہ کی طرف سے جاری کیے گئے ہیں۔ گووبیاو (آسان چینی: 国 标، روایتی چینی: 国 标؛ پنین: Guóbiāo) کا مخفف جی بی (GB) کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

پیداوار
صرف
دیگر

دیگر زبانیں

This page is based on a Wikipedia article written by authors (here).
Text is available under the CC BY-SA 3.0 license; additional terms may apply.
Images, videos and audio are available under their respective licenses.