برازیل

لوا خطا: not enough memory۔

برازیل سنیےi/brəˈzɪl/ (پرتگیزی: لوا خطا: not enough memory۔، بین الاقوامی اصواتی ابجدیہ: [bɾaˈziw] [6]) (پرتگیزی: لوا خطا: not enough memory۔، listen ) براعظم جنوبی امریکا کا ایک بڑا ملک ہے۔

فہرست متعلقہ مضامین برازیل

  1.  لوا خطا: not enough memory۔ لوا خطا: not enough memory۔
  2. http://www.planalto.gov.br/ccivil_03/_Ato2007-2010/2008/Decreto/D6583.htm
  3. مکمل کام یہاں دستیاب ہے: http://www.planalto.gov.br/ccivil_03/Constituicao/ConstituicaoCompilado.htm — مصنف: 1988 Constituent Assembly — عنوان : Constituição da República Federativa do Brasil — باب: 13
  4. http://pesquisa.in.gov.br/imprensa/jsp/visualiza/index.jsp?jornal=515&pagina=55&data=29/08/2018
  5. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج چ ح خ د ڈ ذ ر​ ڑ​ ز ژ س http://data.uis.unesco.org/Index.aspx?DataSetCode=DEMO_DS
  6. یورپی پرتگیزی تلفظ بین الاقوامی اصواتی ابجدیہ: [bɾɐˈziɫ]

لوا خطا: not enough memory۔ لوا خطا: not enough memory۔ لوا خطا: not enough memory۔ لوا خطا: not enough memory۔

Br.

br. برازیل کے لیے مخصوص کردہ بلند ترین اسمِ ساحہ (top-level domain name) ہے۔

ایمیزون برساتی جنگل

ایمیزون برساتی جنگل (Amazon rainforest)

(پرتگیزی: Floresta Amazônica یا Amazônia; ہسپانوی: Selva Amazónica، Amazonía یا عام طور پر Amazonia; فرانسیسی: Forêt amazonienne; ولندیزی: Amazoneregenwoud) جسے طور پر انگریزی میں ایمیزون جنگل (Amazon Jungle) یا ایمیزونیا (Amazonia) بھی کہا جاتا ہے جنوبی امریکا میں ایمیزون طاس پر محیط برساتی جنگل ہے۔ ایمیزون برساتی جنگل دنیا کا سب سے بڑا جنگل ہے جو دریائے ایمیزن اور اس کے معاون دریاؤں کے گرد پھیلا ہوا ہے۔ اس کا رقبہ 2510000 مربع میل، یعنی تقریباً پورے آسٹریلیا کے برابر، ہے۔ جنگلات کی کٹائی اور جنگلی آگ کی وجہ سے جنگل کا رقبہ تیزی سے کم ہو رہا ہے۔

اندازہ لگایا گیا ہے کہ دنیا کی تمام زندہ انواع حیات کا نصف اس جنگلات میں پایا جاتا ہے۔

یہ جنگل 9 ممالک تک پھیلا ہوا ہے جن میں برازیل (برساتی جنگل کا 60 فیصد اس ملک میں واقع ہے)، کولمبیا، پیرو، وینیزویلا، ایکویڈر، بولیویا، گیانا، سرینام اور فرانسیسی گیانا شامل ہیں۔ چار ممالک میں ایمیزوناس نامی ریاستیں یا علاقے واقع ہیں۔ اس علاقے کو ایمیزونیا بھی کہا جاتا ہے۔

یہ علاقہ حشرات الارض کی 2.5 ملین اقسام، لاکھوں نباتات اور پرندوں اور ممالیہ کی دو ہزار انواع کا گھر ہے۔ تحقیق کے مطابق اب تک 40 ہزار پودوں، 3 ہزار مچھلیوں، 1294 پرندوں، 427 ممالیہ، 427 جل تھلی (amphibians) اور 378 رینگے والے جانوروں (reptiles) کی اقسام پائی جاچکی ہیں۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ صرف برازیل میں 96660 سے 128843 غیر فقاری (invertebrate) جانوروں کی اقسام پائی جاتی ہیں۔

==چند حقائق==* یہ جنگل ساڑھے پانچ کروڑ سال پرانا ہے[حوالہ درکار]* ایمزون ایک یونانی لفظ ہے جس کا مطلب لڑاکو عورت ہے[حوالہ درکار]* زمین کی 20 فیصد آکسیجن صرف ایمزون کے درخت اور پودے پیدا کرتے ہیں[حوالہ درکار]* دنیا کے 40 فیصد جانور، چرند، پرند، حشرات الارض ایمزون میں پائے جاتے ہیں[حوالہ درکار]* یہاں 400 سے زائد جنگلی قبائل آباد ہیں، ان کی آبادی کا تخمینہ 45 لاکھ کے قریب بتایا گیا ہے۔ یہ لوگ اکیسیوں صدی میں بھی جنگلی سٹائل میں زندگی گزار رہے ہیں[حوالہ درکار]* اس کے کچھ علاقے اتنے گھنے ہیں کہ وہاں سورج کی روشنی نہیں پہنچ سکتی اور دن میں بھی رات کا سماں ہوتا ہے[حوالہ درکار]* یہاں ایسے زیریلے حشرات الارض بھی پائے جاتے ہیں کہ اگر کسی انسان کو کاٹ لیں تو وہ چند سیکنڈ میں مرجائے[حوالہ درکار]* ایمزون کا دریا پانی کے حساب سے دنیا کا سب سے بڑا دریا ہے،اس کی لمبائ 7ہزار کلومیٹر ہے،[حوالہ درکار]* دریائے ایمزون میں مچھلیوں کی 30 ہزار اقسام پائ جاتی ہیں[حوالہ درکار]* ایمزون کے جنگلات میں 60 فیصد جاندار ایسے ہیں جو ابھی تک بے نام ہیں[حوالہ درکار]* یہاں کی مکڑیاں اتنی بڑی اور طاقتور ہوتی ہیں کہ پرندوں تک کو دبوچ لیتی ہیں[حوالہ درکار]* یہاں پھلوں کی 30 ہزار اقسام پائ جاتی ہیں[حوالہ درکار]* مہم جو اور ماہر حیاتیات ابھی تک اس جنگل کے محض 10 فیصد حصے تک ہی جاسکے ہیں[حوالہ درکار]* اگر آپ ایمزون کے گھنے جنگلات مین ہوں اور موسلا دھار بارش شرع ہوجائے تو تقریبا 12 منٹ تک آپ تک بارش کا پانی نہیں پہنچے گا[حوالہ درکار]

برازیل میں اسلام

برازیل میں اسلام سب سے پہلے افریقی غلاموں نے قبول کیا تھا۔ . ابتدا میں برازیل میں غلام مسلمانوں نے سب سے بڑی بغاوت کی، جو دنیا کی سب سے بڑی غلاموں کی بغاوت تھی۔ اس کے بعد برازیل میں شام اور لبنان کے مسلمان مہاجرین پہنچے جو اب اقلیت کی صورت میں موجود ہیں۔ 2010 کی مردم شماری کے مطابق برازیل میں 35،207 مسلمان آباد ہیں۔

برازیل کی ریاستیں

وفاقی جمہوریہ برازیل ستائیس وفاقی اکائیوں (پرتگیزی: Unidades Federativas) اور ایک وفاقی ضلع کا اتحاد ہے۔

برازیل کے علاقے

برازیل سیاسی جغرافیائی طور پر پانچ علاقوں میں تقسیم ہے - ہر علاقہ تین یا اس سے زیادہ ریاستوں پر مشتمل ہے۔ اگرچہ یہ سرکاری طور پر تسلیم شدہ ہیں تاہم بطور جغرافیائی، سماجی اور اقتصادی عوامل ان کا عمل دخل صرف رسمی ہے اور وفاقی سطح حکومت کے پروگراموں ان کے کوئی سیاسی اثرات نہیں ہیں۔

بین الاقوامی شہری ہوا بازی تنظیم ہواگاہ رموز

بین الاقوامی شہری ہوا بازی تنظیم ہواگاہ رموز (International Civil Aviation Organization airport code - ICAO) چار حروفی الف ہندسی رمز ہے جو دنیا بھر میں ہر ہواگاہ کو تفویض کیا جاتا ہے۔

جرمن زبان

جرمن زبان (آلمانی [ˈdɔʏtʃ] ( سنیے)) وسطی یورپ کے ملکوں جرمنی، آسٹریا، سوئٹزرلینڈ اور لختنشٹائن(لیخٹِن شٹائن) کے لوگوں کی زبان ہے۔ جرمن زبان کا شمار دنیا کی اہم زبانوں میں ہوتا ہے۔ اس کے بولنے والوں کی تعداد 12 کروڑ 20 لاکھ کے قریب ہے۔ دنیا میں سب سے زیادہ ترجمے جرمن زبان میں ہوتے ہیں اور یہ رومن رسم الخط میں لکھی جاتی ہے۔ اس کے کئی لہجے ہیں۔ جرمن صوبے زیریں سیکسنی (ساکسونی)کے شہر ہینور (ھانوفر)کی زبان مستند سمجھی جاتی ہے۔ دوسری جنگ عظیم تک سائنس کی زبان جرمن تھی۔

جنوبی امریکا

جنوبی امریکا مغربی نصف کرہ میں واقع ایک براعظم ہے جس کا بیشتر حصہ جنوبی کرہ ارض میں واقع ہے۔ مغرب میں اس براعظم کی سرحدیں بحر الکاہل اور شمال اور مشرق میں بحر اوقیانوس اور شمالی امریکا اور شمال مغرب میں بحیرہ کیریبیئن سے ملتی ہیں۔

جنوبی امریکا کا نام شمالی امریکا کی طرح یورپی جہاز راں امریگو ویسپوچی کے نام پر رکھا گیا جس نے پہلی مرتبہ یہ انکشاف کیا کہ امریکا دراصل ہندوستان نہیں بلکہ ایک نئی دنیا ہے جسے یورپی نہیں جانتے۔

ریو دے جینیرو

ریو دے جینیرو (پرتگیزی و انگریزی: Rio de Janeiro، یعنی جنوری کا دریا) برازیل کا دوسرا سب سے بڑا شہر ہے جو ریاست ریو دے جینیرو (ریؤدے ژانیرو) کا دار الحکومت بھی ہے۔

یہ شہر تقریبا دو صدیوں تک برازیل کا دار الحکومت رہا ہے۔ جس میں سے 1763ء سے 1822ء تک پرتگیزی نو آبادیاتی دور میں اور 1822ء سے 1960ء تک ایک آزاد مملکت کا دار الحکومت رہا۔ یہ پرتگیزی سلطنت (1808ء – 1821ء) کا بھی سابق دار الحکومت رہا تھا۔ عام طور پر شہر کو صرف ریو کہا جاتا ہے جبکہ اس کی عرفیت "شہر عجیب" (پرتگیزی: A Cidade Maravilhosa، انگریزی: The Marvelous City) ہے۔

ریو قدرتی و جغرافیائی لحاظ سے اپنے خوبصورت مقام، اپنے میلوں ٹھیلوں، موسیقی، حسین ساحلوں اور پرتعیش قیام گاہوں کے باعث دنیا بھر میں معروف ہے۔ شہر کے اہم ترین امتیازی نشانوں میں "مسیح نجات دہندہ" (پرتگیزی: Cristo Redento، انگریزی: Christ the Redeemer) کا مجسمہ ہے جو شہر میں واقع پہاڑی کی چوٹی پر ایستادہ ہے۔ اس مجسمہ کو نئے 7 عجائبات عالم (انگریزی: New Seven Wonders of the World) میں شمار کیا گیا ہے۔ دنیا کے بڑے فٹ بال میدانوں میں سے ایک ریو ہی میں واقع ہے۔

2009ء میں بین الاقوامی اولمپک انجمن نے 2016ء کے اولمپک کھیلوں کی میزبانی ریو دے جینیرو(ریؤدے ژانیرو) کو بخشی ہے جس کے ساتھ ہی وہ جنوبی امریکا کا پہلا شہر بن جائے گا جسے اولمپک کھیلوں کی میزبانی حاصل ہوگی۔ علاوہ ازیں یہ 48 سال بعد پہلا موقع ہوگا کہ میکسیکو (1968ء میکسیکو شہر اولمپکس) کے بعد کسی لاطینی امریکی ملک کو اولمپک کے عالمی مقابلوں کی میزبانی کا شرف حاصل ہوا ہو۔

شہر دنیا کے سب سے بڑے اور دوسرے سب سے بڑ ے شہری جنگلات کا حامل بھی ہے۔ یہاں کا گیلاؤ-انتونیو کارلوس بین الاقوامی ہوائی اڈا شہر کے برازیل اور دنیا بھر کے شہروں سے منسلک کرتا ہے۔

اپنی تمام تر دلفریبی اور دلکشی اور حسن کے باوجود ریو جرائم کے لحاظ سے دنیا کے بڑے شہروں میں شمار کیا جاتا ہے اور شہر کے اس مسئلے کو کئی فلموں میں بھی نمایاں کیا گیا ہے۔ شہر کے بیشتر جرائم نواحی کچی آبادیوں میں ہوتے ہیں لیکن ساتھ ساتھ درمیانے اور اعلی طبقے کے علاقوں میں بھی جرائم کی شرح کم نہیں ہے۔

ساؤ پاؤلو

ساؤ پاؤلو (انگریزی: São Paulo) برازیل کا سب سے بڑا شہر ہے اور یہ دنیا کے بڑے شہروں میں سے ایک ہے۔ یہ ملک کی ریاست ساؤ پاؤلو کا دارالحکومت ہے جو آبادی کے لحاظ سے برازیل کی سب سے بڑی ریاست ہے۔ اس شہر کا نام سینٹ پال سے موسوم ہے۔ تجارت و معیشت کے ساتھ ساتھ فن و ثقافت کے حوالے سے بھی یہ شہر خطے پر اثرات رکھتا ہے۔

شہر میں قدیم گرجے، عجائب گھر، جدید و بلند و بالا عمارات، مالیاتی مراکز اور منڈیاں ہیں۔ ملک کی بلند ترین عمارات مرانتے دو ویل اور ایدیفیسیو اطالیہ بھی یہیں واقع ہیں۔

1523 مربع کلومیٹر (588 مربع میل) کے رقبے پر پھیلے ہوئے شہر کی آبادی اندازہ 11،037،593 ہے۔ اس لحاظ سے یہ جنوبی نصف کرہ کا سب سے بڑا شہر ہے۔

شہر کی معروف عرفیت "سامپا" ہے۔ یہاں کے بین الاقوامی ہوائی اڈے سے اندرون و بیرون ملک کے لیے کئی پروازیں اڑتی ہیں۔

سلطنت برازیل

سلطنت برازیل (Empire of Brazil) انیسویں صدی میں جدید برازیل اور یوراگوئے کے علاقوں پر مشتمل ایک ریاست تھی۔

شمال مشرقی علاقہ، برازیل

برازیل کا شمال مشرقی علاقہ (Northeast Region) (پرتگیزی: Região Nordeste do Brasil) برازیل کے پانچ جغرافیائی علاقوں میں سے تیسرا سب سے بڑا علاقہ ہے جو نو ریاستوں پر مشتمل ہے:

مارانہاؤ، پیاوی، سئیرا، شمالی ریو گرانڈی، پارائیبا، پرنامبوکو، الاگواس، سرژیپی، باہیا اور فرناندو دے نورونہا

پرتگیزی زبان

پرتگیزی زبان یا پرتگالی زبان ایک یورپی زبان ہے۔ دراصل یہ پرتگال کی قومی زبان ہے لیکن پرتگال کی کئی سابقہ مقبوضات میں بھی رائج ہے جن میں برازیل، موزمبیق، انگولا، کیپ ورڈی، گنی بساؤ اور ساؤ ٹومے و پرنسپے شامل ہیں۔ٰ یٰٰٰہ مکاؤ (چین)، مشرقی تیمور ، استوائی گنی میں بھی دفتری زبان ہے۔ٰ

یہ دنیا میں بولے جانے والی پانچویں بڑی زبان ہے۔ یہ جنوبی امریکا میں بولے جانے والی سب سے بڑی زبان ہے۔ یہ یورپی اتحاد کی دفتری زبان مانی گئی ہے۔

مارچ 2006ء میں پرتگالی زبان کا عجائب گھر ساؤ پاؤلو، برازیل میں کھولا گیا۔

پمپاز

پمپا یا پامپا جنوبی امریکا کے وسیع میدانوں کو کہا جاتا ہے جہاں درخت نہیں ہیں لیکن چراگاہیں بکثرت موجود ہیں۔ کوئنچا زبان میں پمپا کا مطلب "میدان" ہے۔ جنوبی برازیل، یوراگوئے اور ارجنٹائن کے ان میدانوں میں مویشی خوب پالے جاتے ہیں۔ شمالی امریکا کے اسی قسم کے میدان "پریریز" کہلاتے ہیں۔ ریاستہائے متحدہ امریکا کے جنوب مشرق میں ایسے میدانوں کو "سوانا" کہا جاتا ہے۔

پیرو

جمہوریہ پیرو جنوبی امریکا کے مغرب میں واقع ایک ملک ہے۔ ایکواڈور، کولمبیا، برازیل، بولیویا اور چلی اس کے پڑوسی ممالک ہیں۔

گیاناز

جنوبی امریکا کے شمال مشرقی ساحلوں پر واقع تین ممالک کو مجموعی طور پر گیاناز کہا جاتا ہے

گیانا-سابق برطانوی گیانا

سرینام-سابق ولندیزی گیانا

فرانسیسی گیانا-فرانس کا زیر قبضہ علاقہکبھی کبھار یہ اصطلاح پڑوسی ممالک کے چند علاقوں کو شامل کرکے بھی استعمال کی جاتی ہے جن میں وینیزویلا کا خطہ گیانا اور برازیل کا خطہ گیانا شامل ہیں۔

جب وینیزویلا اور برازیل کے علاقوں کو اس تعریف میں شامل کیا جاتا ہے تو اس خطے کی جغرافیائی سرحدیں شمال مشرق میں بحر اوقیانوس، شمال مغرب میں اورینوکو اور جنوب مشرق میں دریائے ایمیزن تک پہنچ جاتی ہیں۔

یوراگوئے

یوراگوئے جنوبی امریکا کے جنوب مشرقی حصے میں واقع ایک ملک ہے۔ ملک میں رہنے والی تقریباً 35 لاکھ کی آبادی میں سے 11 لاکھ افراد دار الحکومت مونٹیویڈیو اور اس میٹروپولیٹن علاقے میں رہائش گاہ کرتے ہیں۔ ملک کی 88-94٪ آبادی یورپی یا مخلوط لوگ ہیں۔

یوراگوئے کی زمینی سرحد مشرق اور شمال میں برازیل سے اور مغرب میں ارجنٹائن، شمال میں ریو گرینڈ دو سول سے ملتی ہے۔ اس کے مغرب میں یوراگوئے دریا، دكشپشچم میں ریو دی لا پلاتا کا مہانا اور جنوب میں جنوبی اندھ اوقیانوس واقع ہے۔ یوراگوئے جنوبی امریکا میں سورینام کے بعد دوسرا سب سے چھوٹا ملک ہے۔

یوراگوئے میں سب سے پرانی یورپی کالونی كولونيا ڈیل سكارمے ٹو قائم پرتگال کی طرف سے 1680 میں کی گئی تھی۔ موٹے ويڈيو قائم سپے نيو نے 18 ویں صدی کے ابتدائی دور میں فوجی گڑھ کے طور پر کی تھی۔ یوراگوئے نے 1825–1928 کے درمیان میں سپین، ارجنٹائن اور برازیل کے درمیان میں تین طرفہ جنگ کے بعد آزادی حاصل کی۔ یہاں آئینی جمہوریت ہے، جہاں صدر ریاست کے ساتھ ساتھ حکومت کے بھی سربراہ ہیں۔

یوراگوئے کی معیشت بنیادی طور زراعت پر اور ریاست سروس پر مبنی ہے۔ ٹراسپرے سي انٹرنیشنل کے مطابق، یوراگوئے لاطینی امریکا میں (چلی کے ساتھ) سب ​​سے کم بدعنوان ملک ہے، جہاں کی سیاسی اور کام حالات براعظم میں سب سے زیادہ کھلی ہے۔

یوراگوئے اعلیٰ انسانی ترقی انڈیکس اور فی کس آمدنی کے لحاظ سے لاطینی امریکا کے سب سے ترقی یافتہ معیشت والا ملک ہے۔

دیگر زبانیں

This page is based on a Wikipedia article written by authors (here).
Text is available under the CC BY-SA 3.0 license; additional terms may apply.
Images, videos and audio are available under their respective licenses.